rss

وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن، وزیر دفاع جیمز ماٹس اور نیشنل انٹیلیجنس کے ڈائریکٹر ڈین کوٹس کا مشترکہ بیان

Français Français, Português Português, Русский Русский, Español Español

امریکی محکمہ خارجہ
دفتر برائے ترجمان

برائے فوری اجرا
میڈیا نوٹ
2017اپریل26

شمالی کوریا کے ہتھیاروں کے غیر قانونی پروگرام اور نیوکلیئر اور بلسٹک مزائلوں کے تجربات روکنے کی ماضی کی تمام کوششیں ناکام ہوئی ہیں۔ اشتعال انگیزی کی اپنی ہر حرکت سے شمالی کوریا شمال مشرقی ایشیا میں استحکام کو نقصان پہنچانے کے ساتھ ساتھ ہمارے اتحادیوں اور امریکی مادر وطن کے لیے ایک بڑھتا ہوا خطرہ ہے۔

شمالی کوریا کی طرف سے نیوکلیئر اسلحہ کے حصول کی کوششوں سے قومی سلامتی کو ہنگامی خطرہ لاحق ہے اور اسی سبب اس سے نمٹنا خارجہ پالیسی کی اولین ترجیح ہے۔ اپنے عہدے کا چارج سنبھالتے ہی صدر ٹرمپ نے شمالی کوریا کے حوالے سے امریکی پالیسی کا تفصیلی جائزہ لینے کا حکم دیا تھا۔

آج جوائنٹ چیف آف سٹاف جنرل جو ڈینفرڈ کے ہمراہ ہم نے ارکان کانگریس کو اس جائزے بارے آگاہ کیا ہے۔اس حوالے سے صدر کی حکمت عملی یہ ہے کہ اقتصادی پابندیوں اور خطے میں اپنے دوستوں اور شراکت داروں کی سفارتی مدد سے شمالی کوریا کو مجبور کیا جائے کہ وہ اپنے نیوکلیئر، بلسٹک اور اسلحہ کے پھیلاؤ کے بروگرام کو ترک کر دے۔

ہم بین الاقوامی برادری کے ذمہ دار ارکان کی مدد سے کوشش کر رہے ہیں کہ شمالی کوریا پر دباؤ بڑھایا جائے تاکہ اس کی حکومت کو تناؤ کم کرنے اور مزاکرات پر آمادہ کیا جاسکے۔ ہم اپنے اتحادیوں خاص طور پر جنوبی کوریا اور جاپان کے ساتھ قریبی رابطے میں رہینگے تاکہ مل کر خطے میں استحکام برقرار رکھا جا سکے۔ امریکہ جزیرہ نما کوریا میں استحکام اور ایٹمی عدم پھیلاؤ کا خواہشمند ہے۔ ہم اس مقصد کے حصول کے لیے مزاکرات کے لیے تیار ہیں۔ لیکن اس کے ساتھ ساتھ ہم اپنے اور اپنے اتحادیوں کے دفاع کے لیے بھی ہمہ وقت تیار ہیں۔

###

یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں