rss

اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے 35ویں اجلاس میں امریکی ترجیحات کے نمایاں نتائج

العربية العربية, Русский Русский, Español Español, Português Português, Français Français

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجراء
حقائق نامہ
26 جون 2017

جنیوا میں 6 تا 23 جون اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل (ایچ آر سی) کے 35 ویں اجلاس میں انسانی حقوق کے حوالے سے فوری مسائل پر عالمگیر ردعمل کی تشکیل کے حوالے سے امریکی قیادت نے اہم کردار ادا کیا۔ اقوام متحدہ میں امریکہ کی مستقل سفیر نکی ہیلی نے اجلاس کی افتتاحی تقریب میں شرکت کی اور ‘ایچ آر سی’ میں اصلاحات کے حوالے سے بات چیت کی ازسرنو حوصلہ افزائی کرتے ہوئے انسانی حقوق بارے امریکی عزم کی توثیق کی۔ ایچ آر سی کے چیمبر اور جنیوا کے گریجوایٹ انسٹیٹیوٹ میں خطاب کرتے ہوئے نکی ہیلی نے انسانی حقوق کونسل کے ساتھ مستقبل میں تعلق کے حوالے سے امریکہ کی پوزیشن واضح کی۔ انہوں نے ایچ آر سی میں اصلاحات کی ضرورت نمایاں کی تاکہ اسے مزید موثر اور جوابدہ بنایا جا سکے جس میں صرف اسرائیل کے خلاف تعصب پر مبنی ایجنڈے کا خاتمہ بھی شامل ہے۔ انہوں نے اس امر پر زور دیا کہ ایچ آر سی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کرنے والوں کی جانب عالمی توجہ اور کارروائی مبذول کرائے جس میں کونسل کی رکنیت کے ضمن میں اصلاحات اور ارکان کی جانب سے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق سے متعلق طریقہ کار میں تعاون کے لیے قیادت کے اظہار کی ضرورت بھی شامل ہے۔ امریکہ نے 47 دیگر ممالک کے ہمراہ ہالینڈ کے زیرقیادت ایک مشترکہ اعلامیے پر ددستخط کیے جس میں کونسل کی رکنیت میں بہتری لانے اور اس کی ساکھ مضبوط بنانے کے اقدامات تجویز کیے گئے ہیں۔

جمہوریہ کانگو: امریکہ نے ایک قرارداد پر اتفاق رائے میں بھی شمولیت اختیار کی جس کی رو سے ایک عالمی ٹیم جمہوری کانگو (ڈی آر سی) کے صوبے کاسائی میں ظلم و زیادتی کی تحقیقات کرے گی۔ ہم نے ایک کڑا بیان جاری کیا جس میں جمہوریہ کانگو کی حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ ان تحقیقات میں تعاون کرے، ملک کے تمام حصوں میں بلا روک ٹوک رسائی دے، اس ٹیم کے ساتھ تعاون کرنے والے تمام لوگوں بشمول متاثرین اور گواہوں کا تحفظ یقینی بنائے اور سیاسی وابستگیوں سے قطع نظر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور زیادتیوں کے تمام مرتکبین کا احتساب یقینی بنائے۔

وینزویلا: 6 جون کو امریکہ نے (برطانیہ، جارجیا اور اسرائیل کے ساتھ) وینزویلا میں انسانی حقوق کی بگڑتی  صورتحال پر توجہ مبذول کرانے کے لیے ایک الگ پروگرام کروایا۔ اس موقع پر امریکی سفیر نکی ہیلی نے افتتاحی کلمات کہے جس کے بعد آزادی اظہار پر ایک گروہی مباحثہ ہوا جس میں وینزویلا سے تعلق رکھنے والے انسانی حقوق کے چار حامیوں اور انسانی حقوق پر انٹرامریکن کمیشن (آئی اے سی ایچ آر) کے خصوصی نمائندے نے شرکت کی۔ اس پروگرام کے بعد امریکہ نے وینزویلا کے وفد کی جانب سے مباحثے کے دو شرکاء کے خلاف انتقامی کارروائی کی مذمت کی۔

صنفی مساوات: امریکہ نے خواتین کے خلاف تشدد نیز عورتوں اور لڑکیوں کے خلاف امتیازی سلوک کے خاتمے کی قراردادوں پر اتفاق رائے میں شمولیت اختیار کی۔ ہم نے انسانی بیوپار اور کم عمری کی شادیوں کے معاملے پر خصوصی رپورٹرز کے اختیار میں اضافے کی قراردادوں کی پیش کاری میں معاونت بھی کی۔

دیگر ممالک کے حوالے سے قراردادیں: امریکہ نے شام میں خاص طور پر حکومت کی جانب سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی بابت قرارداد میں معاونت بھی کی۔  ہم نے یوکرائن کی حکومت کی جانب سے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق سے متعلق نگرانوں کے ساتھ تعاون بارے خیرمقدمی قرارداد کی پیشکاری میں بھی تعاون کی۔ بیلارس اور اریٹریا میں انسانی حقوق کی صورتحال پر امریکہ خصوصی رپورٹرز کے اختیارات کی بھرپور حمایت جاری رکھے ہوئے ہے ۔ ہم نے آئیوری کوسٹ میں انسانی حقوق پر حکومت اور اقوام متحدہ میں تعاون جاری رکھنے پر صدر کے بیان کی تائید کی۔

دیگر موضوعی قراردادیں: امریکہ نے دہشت گردی سے نمٹنے کے دوران انسانی حقوق اور بنیادی آزادیوں کے تحفظ نیز معذور افراد کے حقوق، ججوں، وکلا اور انسانی حقوق پر کام کرنے والے ورکنگ گروپ اور عبوری اداروں کی آزادی سے متعلق خصوصی رپورٹرز کے اختیارات میں وسعت کی بابت قراردادوں کی معاونت بھی کی۔

###


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں