rss

شام میں 2013 کے کیمیائی حملوں کی برسی پر بیان

العربية العربية, English English, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Español Español

وائٹ ہاؤس

دفتر برائے سیکرٹری اطلاعات

برائے فوری اجراء

21 اگست 2017

آج شامی دارالحکومت دمشق کے مضافاتی علاقے غوطہ میں مہلک کیمیائی حملے کو چار برس مکمل ہو گئے ہیں۔ شامی حکومت کے اس حملے میں 1400 سے زیادہ لوگ ہلاک ہو گئے تھے۔ اس المناک واقعے کے نتیجے میں جنم لینے والی ایک عالمی کوشش 1000 میٹرک ٹن سے زیادہ شامی کیمیائی ہتھیاروں کے خاتمے پر منتج ہوئی۔ تاحال، رواں سال 4 اپریل کو اسد نے ثابت کیا کہ بلاشبہ اس کے پاس اب بھی یہ ظالمانہ ہتھیار موجود ہیں جنہیں وہ معصوم شہریوں کے خلاف استعمال کرنے کا خواہش مند ہے۔

عالمی برادری کو یہ المناک واقعات یاد رکھنے چاہئیں۔ ہمیں یہ امر یقینی بنانے کے لیے یک آواز ہو کر ایک ہی مقصد کے لیے کام کرنا چاہیے کہ شامی حکومت اور کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے کا ارادہ رکھنے والے کسی بھی کردار کو اندازہ ہوکہ ایسے کسی اقدام کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے۔ جیسا کہ صدر نے واضح طور پر کہا ہے امریکہ ایسے ہتھیاروں کا استعمال یا پھیلاؤ روکنے کے لیے اپنا کردار ادا کرے گا۔ کیمیائی ہتھیاروں کے کنونشن پر دستخط کرنے والے بہت سے دیگر ملکوں کے ساتھ ہم کیمیائی ہتھیاروں سے پاک دنیا تخلیق کرنے کا عزم کرتے ہیں۔

آج ایسے عزم کی یاددہانی کا مناسب موقع ہے۔ ہم ایک مرتبہ پھر تمام ممالک سے کہتے ہیں کہ وہ متحد رہیں اور اس امر میں کوئی شبہ نہ رہنے دیں کہ کیمیائی ہتھیاروں کا استعمال برداشت نہیں کیا جائے گا۔

# # #


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں