rss

وزیر دفاع میٹس کا وائٹ ہاؤس سے بیان

हिन्दी हिन्दी, English English, العربية العربية

پریس آپریشنز

وزیر دفاع جم میٹس

3 ستمبر 2017

ہم نے آج صدر اور نائب صدر کے ساتھ جزیرہ نما کوریا میں حالیہ اشتعال انگیزی پر قومی سلامتی  کا ایک مختصر رکنی اجلاس کیا۔

ہمارے پاس کئی عسکری راستے ہیں اور صدر ان میں سے ہر ایک بارے جاننا چاہتے تھے۔

ہم نے یہ واضح کیا ہے کہ کسی بھی حملے کی صورت میں ہم اپنا اور اپنے اتحادیوں، جنوبی کوریا اور جاپان، کا دفاع کرنے کی اہلیت رکھتے ہیں۔ اور اتحادیوں کے درمیان کیے گئے عہد ناقابل تسخیر ہیں۔

امریکہ اور گوآم سمیت اس کے علاقوں اور ہمارے اتحادیوں کو درپیش کسی بھی خطرے کا بھرپور عسکری جواب  دیا جائے گا، جو پراثر اور بھرپور ہوگا۔

کم جونگ اون کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی طرف سے اٹھنے والی مشترکہ  آواز پر کان دھرنے چاہیں، تمام ارکان شمالی کوریا کی طرف سے پیدا ہونے والے خطرے کے خلاف یک زبان تھے اور وہ جزیرہ نما کوریا کو نیوکلیئر ہتھیاروں سے پاک کرنے کے عزم پر اب بھی قائم ہیں کیونکہ ہم  ایک ملک کی مکمل تباہی نہیں چاہتے جس کا نام شمالی کوریا ہے۔

لیکن جیسا کہ میں نے کہا کہ ہمارے پاس ایسا کرنے کے کئی راستے ہیں۔ آپ کا بہت شکریہ۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں