rss

مہاجرین کے امریکی معاشرے میں ادغام اور مالی کامیابی کے لیے اہلیت پر مبنی اصلاحات

Facebooktwittergoogle_plusmail
English English, Français Français, हिन्दी हिन्दी

وائٹ ہاؤس

دفتر برائے سیکرٹری اطلاعات

برائے فوری اجرا

8 اکتوبر 2017

سلسلہ وار ہجرت کا خاتمہ: تارکین وطن کے بارے میں نئی حکمت عملی کی بدولت خاندان کی بنیاد پر جاری ہونے والی گرین کارڈ میاں بیوی، امریکی شہریت رکھنے والوں کے چھوٹے بچوں اور مستقل قانونی رہائشیوں تک محدود رہیں گے۔

  • کارکن دوست امیگریشن اصلاحات کی بدولت سلسلہ وار ہجرت کا خاتمہ ہو گا اور مستقل قانونی رہائشی درجہ خاندانی تعلقات کے بجائے اہلیت کی بنیاد پر ملے گا جس سے تارکین وطن کو اس سماج کا حصہ بننے، مالیاتی خودمختاری اور ترقی میں مدد ملے گی۔
  • کمتر ہنرمندی کے حامل بیشتر تارکین وطن ہمارے ویزا نظام کے ذریعے قانونی طور پر امریکہ آتے ہیں۔ اس نظام میں خاندان کی بنیاد پر سلسلہ وار مہاجرت کو ترجیح دی جاتی ہے۔
  • امریکہ ہر سال 10 لاکھ سے زیادہ لوگوں کو مستقل گرین کارڈ جاری کرتا ہے جن میں بہت سے صرف خاندانی تعلقات کی بنیاد پر دیے جاتے ہیں۔
  • گزشتہ 35 برس میں امریکہ آنے والے 60 فیصد سے زیادہ لوگ سلسلہ وار ہجرت کے ذریعے یہاں پہنچے ہیں۔

اہلیت کی بنیاد پر مہاجرت کے لیے پوائنٹس کی بنیاد پر نظام: تارکین وطن کے حوالے سے نئی حکمت عملی میں پوائنٹس کی بنیاد قائم کردہ نظام کے تحت گرین کارڈ جاری کیے جائیں گے جس سے امریکی کارکنوں اور ٹیکس دہندگان کو تحفظ ملے گا، تارکین وطن کے مقامی سماج میں ادغام کی حوصلہ افزائی ہو گی اور نئے آنے والوں کے لیے مالیاتی خودکفالت کی ضمانت ملے گی۔

  • امریکہ میں آنے والے ہر 15 میں صرف ایک تارک وطن کو صلاحیت اور ہنر کی بنیاد پر ملک میں داخلہ ملتا ہے۔
  • تارکین وطن کے تمام گھرانوں میں نصف سے زائد ایک یا زیادہ بہبودی پروگرامز سے فائدہ اٹھاتے ہیں۔
  • کئی دہائیوں تک کمترہنرمندی کے حامل تارکین وطن کو ملک میں داخلہ دینے سے اجرتوں میں کمی آئی، بیروزگاری میں اضافہ ہوا اور وفاقی وسائل پر دباؤ آیا۔

‘متنوع ویزا’ لاٹری کا خاتمہ: امریکہ ہر سال ‘متنوع ویزا’ لاٹری کے ذریعے مختلف غیرملکیوں کو 50 ہزار گرین کارڈ جاری کرتا ہے جن میں بہت سے لوگوں کا امریکہ سے کوئی رشتہ ہوتا ہے ، نہ ان میں کوئی خاص اہلیت پائی جاتی ہے اور ان کی تعلیمی صلاحیتیں بھی محدود ہوتی ہیں۔

  • ‘متنوع ویزا’ لاٹری میں دھوکہ دہی کا امکان رہتا ہے اور امریکہ کواس پروگرام پر عملدرآمد کے حوالے سے ناصرف بھاری وسائل خرچ کرنا پڑتے ہیں بلکہ اس میں بہت سا وقت بھی صرف ہوتا ہے۔
  • یہ لاٹری مستقل تارکین وطن کی بہت بڑی تعداد کو امریکہ میں لانے کا باعث بنتی ہے۔ لاٹری جیتنے والے بہت سے لوگوں کے امریکہ میں کوئی تعلقات نہیں ہوتے اور وہ سلسلہ وار مہاجرت کے ذریعے اپنے رشتہ داروں کو ملک میں لانےکا باعث بنتے ہیں۔

مہاجرین کی تعداد مناسب حد تک رکھنے کا اہتمام: اگرچہ امریکہ مہاجرین کو قبول کرنے والا دنیا کا سب سے بڑا ملک ہے اور حال ہی میں یہاں آنے والے پناہ گزینوں کی تعداد ماضی سے کہیں بڑھ گئی ہے، تاہم مہاجرین کے ملک میں داخلے کی حد کو امریکی ترجیحات سے ہم آہنگ رکھنا ضروری ہے۔

  • تاریخی طور پر دیکھا جائے تو امریکہ نے جتنے مہاجرین کو ملک میں جگہ دی ہے ان کی تعداد پوری دنیا میں پناہ لینے والے مہاجرین کی مجموعی تعداد سے بھی زیادہ ہے۔
  • ایک جائزے کے مطابق امریکہ میں ایک مہاجر کو مستقل آباد کرنے پر جتنا خرچ آتا ہے اس سے ایسے 12 مہاجرین کو ان کے اپنے ممالک کےقریب محفوظ علاقوں میں آباد کیا جا سکتا ہے۔
  • حقیقی اہلیت کے حامل مہاجرین کو ملک میں داخلہ دینے اور چھان بین کے طریقہ ہائے کار کو بہتر بنا کر ہم مہاجرین کے امریکہ داخلےکے پروگرام میں دھوکہ دہی سے نمٹ سکتے ہیں، پناہ گزینوں کا خیرمقدم کرنے کے لیے قومی اہلیت میں اضافہ ہو سکتا ہے اور اس طرح ہم انہیں امریکی طرز زندگی سے مطابقت پیدا کرنے میں مدد دے سکتے ہیں۔

###


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
ای میل کے ذریعے تازہ معلومات حاصل کریں
تازہ اطلاعات یا اپنی منتخب کردہ ترجیحات تک رسائی کے لیے مہربانی کر کے ذیل میں اپنی رابطہ معلومات درج کریں