rss

کول کیٹس: برفانی تیندوے کا تحفظ

Русский Русский, English English, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Español Español


امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
19 اکتوبر 2017
میڈیا بیان

 

قائم مقام معاون وزیرخارجہ برائے سمندری و عالمی ماحولیاتی و سائنسی امور جوڈتھ گیربر 19 اکتوبر کو امریکی دفتر خارجہ میں ہونے والی ایک تقریب میں برفانی تیندوے کے تحفظ کے لیے امریکی حکومت کی کوششوں کو سامنے لائیں گی۔ یہ تقریب امریکی ادارہ برائے عالمی ترقی (یوایس ایڈ) اور ورلڈ وائلڈ لائف فنڈ کے ایشیا میں بلند پہاڑی علاقوں اور وہاں کے لوگوں میں تحفظ و موافقت کے منصوبے کی کامیاب تکمیل کے موقع پر ہو رہی ہے جس میں برفانی تیندوے کے تحفظ کے لیے عالمی تعاون اور 12 ایسے ممالک کی جانب سے کی گئی کوششوں پر روشنی ڈالی جائے گی جہاں یہ جانور پایا جاتا ہے۔

برفانی تیندووں کو ‘پہاڑی بھوت’ بھی کہا جاتا ہے جو افغانستان، بھوٹان، چین، انڈیا، کرغیزستان، قازقستان، نیپال، منگولیا، پاکستان، روس، تاجکستان اور ازبکستان کے پہاڑوں میں ملتے ہیں۔ بڑے سائز کا یہ چیتا اپنے علاقے میں سب سے بڑا شکاری ہے اور اپنے ماحولی نظام پر گہرے اثرات مرتب کرتا ہے۔ برفانی تیندوے کی آبادیوں کو اپنے ماحول کے خاتمے، انسان اور جنگلی حیات میں تصادم اور جنگلی جانوروں کی غیرقانونی تجارت کے باعث خطرات کا سامنا ہے۔ حالیہ اندازوں کے مطابق دنیا میں محض 4000 سے 8000 برفانی تیندوے باقی رہ گئے ہیں۔ ستمبر 2017 میں ‘عالمی اتحاد برائے تحفظ فطرت’ (آئی یو سی این) نے برفانی تیندووں کی فہرستیں تیار کی تھیں جن میں انہیں ‘خطرات سے دوچار’ سے لے کر ‘معدومیت کے نشانے پر’ جیسی درجہ بندی میں رکھا گیا تھا مگر جنگلوں میں ان کی کامیابی بدستور بہت معمولی ہے۔ برفانی تیندوے کا عالمی دن 23 اکتوبر کو منایا جاتا ہے۔

دفتر خارجہ کے جنوبی و وسطی ایشیائی امور کے بیورو، یو ایس ایڈ، سفارت خانہ اسلامی جمہوریہ افغانستان، سفارت خانہ منگولیا، سنو لیپرڈ ٹرسٹ اور برفانی تیندوے اور ماحولیاتی نظام کے تحفظ کے پروگرام کے نمائندے بھی اس تقریب سے خطاب کریں گے جس میں تمام بارہ ممالک کے نمائندے بھی شریک ہو رہے ہیں۔

امریکہ برفانی تیندوے کے تحفظ کے لیے دنیا بھر کی حکوموں کے ساتھ کام کے لیے تیار ہے۔ یوایس ایڈ اور ورلڈ وائلڈ لائف فنڈ کی جانب سے ایشیا کے بلند پہاڑی علاقوں اور لوگوں میں تحفظ اور موافقت کے پرگرام کی بدولت برفانی تیندووں اور ان کے ماحول کی حفاظت، تحفظ آب کی صورتحال میں بہتری اور برفانی تیندوے کے مسکن والے ممالک میں پائیدار فطری وسائل کے انصرام و ترقی کو فروغ دینے میں مدد ملی ہے۔

 

مزید معلومات کے لیے ٹوری پیباڈی سے رابطہ کیجیے [email protected]<mailto:[email protected] اور دفتر برائے عالمی ماحولیات و سائنسی امور کو ٹویٹر پر فالو کیجیے @StateDeptOES اور #snowleopards

# #


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں