rss

وزیرخارجہ ٹلرسن کا دورہ جاپان، جنوبی کوریا، چین، ویت نام، فلپائن اور برما

English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский, Español Español

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
ترجمان دفتر خارجہ ہیدا نوئرٹ کا بیان
برائے فوری اجرا
2 نومبر 2017

    
    
    

وزیرخارجہ ٹلرسن صدر کے دورہ جاپان، جمہوریہ کوریا، چین، ویت نام اور فلپائن میں ان کے ہمراہ ہوں گے۔ وزیرخارجہ برما میں اضافی قیام بھی کریں گے۔ وزیرخارجہ کا چھ ملکی دورہ ایشیائی الکاہل خطے میں ہمارے اتحادوں اور شراکتوں کے حوالے امریکی عزم کا اظہار ہے اور اس سے علاقائی امور اور باہمی مفاد و دلچسپی کے ضمن میں ایشیائی الکاہل میں معاشی تعاون (اے پی ای سی) اور مشرقی ایشیائی کانفرنس (ای اے ایس) میں ہماری ذمہ داریوں کا اظہار ہوتا ہے۔

وزیرخارجہ 5 تا 7 نومبر جاپانی دارالحکومت ٹوکیو کا دورہ کریں گے ۔ وزیرخارجہ ٹلرسن وزیراعظم ایبے کے ساتھ صدر کی دوطرفہ ملاقات میں شریک ہوں گے اور جاپانی و امریکی کاروباری رہنماؤں نیز شمالی کوریا کی حکومت کی جانب سے اغوا کیے گئے جاپانی شہریوں کے اہلخانہ سے ملیں گے۔ وزیرخارجہ صدر کی جانب سے امریکہ جاپان اتحاد کو ترقی دینے، شمالی کوریا کے حوالے سے ہمارے مشترکہ عزم کو مضبوط بنانے اور مزید متوازن تجارت پر زور دیں گے جس سے طلب کی بنیاد پر مضبوط داخلی ترقی اور آزادانہ و شفاف تجارتی عمل کو فروغ ملتا ہے۔

وزیرخارجہ ٹلرسن 7 تا 8 نومبر جنوبی کوریا کے دارالحکومت سیئول کا دورہ کریں گے۔ سیئول میں وہ صدر کی کوریا کے اعلیٰ حکام سے ملاقات میں شریک ہوں گے جس میں امریکہ اور جمہوریہ کوریا کے اتحاد اور ہماری مشترکہ عالمی ترجیحات بشمول شمالی کوریا کی جانب سے لاحق خطرے پر ہمارے مربوط ردعمل کے بارے میں بات چیت ہو گی۔

وزیرخارجہ 8 تا 10 نومبر چینی دارالحکومت بیجنگ جائیں گے جہاں وہ صدر کی اپنے چینی ہم منصب ژی جن پنگ سے ملاقات میں شریک ہوں گے۔ وہ چینی حکام سے دوطرفہ، علاقائی اور عالمگیر امور پر بات چیت کریں گے جن سے دونوں ممالک متاثر ہوتے  ہیں۔ امریکہ چین کے ساتھ تعمیری اور نتیجہ خیز تعلقات کا خواہاں ہے۔

وزیرخارجہ ٹلرسن 10 نومبر کو ویت نام کے شہر ڈیننگ جائیں گے جہاں وہ صدر کے ساتھ ایشیائی الکاہل میں معاشی تعاون کی تنظیم کے اجلاسوں میں شریک ہوں گے۔ اے پی ای سی پورے ایشیائی الکاہل خطے میں تجارت اور سرمایہ کاری کی راہ میں رکاوٹیں کم کرنے کے لیے باہمی تعاون کو فروغ دینے کی غرض سے رہنماؤں کی سطح کا ممتاز فورم ہے۔ وزیرخارجہ 11 نومبر کو اعلیٰ سطحی ویت نامی رہنماؤں سے ملاقاتوں کے لیے صدر کے ہمراہ ہنوئی جائیں گے۔

وزیرخارجہ 12 اور 13 نومبر کو صدر کے ساتھ منیلا میں جا ملیں گے جہاں مشرقی ایشیا کانفرنس (ای اے ایس) کے 18 رکن ممالک کے سربراہوں سے ملاقات میں آسیان کی بنیاد پر علاقائی منصوبہ بندی کے حوالے سے پائیدار امریکی عزم کی توثیق کی جائے گی۔ ای اے ایس ایشیائی بحرالکاہل میں بیشتر سیاسی سلامتی امور کے حوالے سے خطے کے سربراہوں کا سب سے بڑا فورم ہے۔ وزیرخارجہ آسیان کی 50ویں سالگرہ کی تقریبات اور امریکہ آسیان شراکت کی 40 وی سالگرہ کی یادگاری کانفرنس میں صدر کے ساتھ ہوں گے۔ وزیرخارجہ 13 نومبر کو صدر ڈوٹرٹ کے ساتھ دوطرفہ ملاقات میں بھی صدر ٹرمپ کے ساتھ موجود ہوں گے۔ وزیرخارجہ 14 نومبر کو ‘ای اے ایس’ کے مکمل اجلاس میں صدر ارو امریکہ کی نمائندگی کریں گے۔

بعدازاں وزیرخارجہ برما کے دارالحکومت نیپیڈا جائیں گے جہاں وہ 15 نومبر کو اعلیٰ سطحی رہنماؤں اور حکام سے راخائن ریاست میں انسانی بحران اور امریکہ کی جانب سے برما میں جمہوری تبدیلی کی حمایت پر مشاورت کریں گے۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں