rss

اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کا برما کے بارے میں خصوصی اجلاس

Facebooktwittergoogle_plusmail
हिन्दी हिन्दी, English English, العربية العربية

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
5 دسمبر 2017
ترجمان دفتر خارجہ ہیدا نوئرٹ کا بیان

 
 

آج صبح جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کا برما کے بارے میں خصوصی اجلاس ہوا۔ امریکہ نے شروع سے ہی اس خصوصی اجلاس کے انعقاد کی حمایت کی تھی اور میانمار میں روہنگیا مسلمانوں اور دوسری اقلیتوں کی صورتحال پر پیش کردہ قرارداد کا معاون تھا۔ خصوصی اجلاس میں اقوام متحدہ کی معاشی و سماجی کونسل کے لیے امریکہ کی خصوصی نمائندہ کیلی ایکلز کیوری اور دفتر خارجہ میں جمہوریت، انسانی حقوق و محنت بارے معاون وزیر سکاٹ بسبی نے وزیرخارجہ ٹلرسن کی اس بات کا اعادہ کیا کہ برما میں انسانی حقوق کا مسئلہ حل کرنے کے لیے تمام فریقین تعمیری کردار ادا کریں اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے مرتکبین کا احتساب ہونا چاہیے۔

امریکہ نے تشدد کے فوری خاتمے، قانون کی بحالی، حقائق سے آگاہی کے لیے اقوام متحدہ کے مشن کو ملک بھر میں رسائی دینے، متاثرہ علاقوں میں امدادی اداروں اور میڈیا کی فوری رسائی ممکن بنانے اور برما میں واپسی کے خواہش مند لوگوں کی قابل تصدیق، محفوظ اور رضاکارانہ واپسی کی ضمانت دینے پر زور دیا۔

تمام لوگوں کے انسانی حقوق کا احترام جمہوریت کا بنیادی عنصر ہے اور امریکہ پورے برما میں امن، استحکام اور خوشحالی کے لیے منتخب سویلین حکومت کی معاونت کے لیے تیار ہے۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
ای میل کے ذریعے تازہ معلومات حاصل کریں
تازہ اطلاعات یا اپنی منتخب کردہ ترجیحات تک رسائی کے لیے مہربانی کر کے ذیل میں اپنی رابطہ معلومات درج کریں