rss

صدارتی اعلان پر مکمل عملدرآمد کا آغاز

English English, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский, Español Español

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
میڈیا بیان
برائے فوری اجرا
8 دسمبر 2017

 

 

دفتر خارجہ صدارتی اعلان 9645 (دہشت گردوں کی جانب سے امریکہ داخلے کی کوششوں کی نشاندہی یا عوامی تحفظ کو لاحق دیگر خطرات کے جائزے کی اہلیتوں میں اضافہ) پر سپریم کورٹ کی جانب سے 4 دسمبر 2017 کے احکامات کے مطابق مکمل عملدرآمد کر رہا ہے۔ دفتر خارجہ نے (مقامی وقت کے مطابق) آج بروز جمعہ 8 دسمبر 2017 سے سمندرپار امریکی سفارت خانوں اور قونصل خانوں میں کام کے آغاز پر اس اعلان کے ضمن میں مکمل عملدرآمد شروع کیا۔

ویزا کارروائیوں میں قومی سلامتی ہماری اولین ترجیح ہے۔ دنیا بھر میں ہمارے سفارت خانے اور قونصل خانے سپریم کورٹ کی جانب سے اجازت ملنے اور دفتر خارجہ کی جانب سے جامع ہدایات مہیا کیے جانے کے بعد امریکی عوام کے تحفظ کے لیے صدارتی اعلان 9645 پر مکمل عملدرآمد کر رہے ہیں۔

دہشت گردوں کے حملے، بین الاقوامی جرائم اور امیگریشن کے عمل میں دھوکہ دہی کی روک تھام تمام ممالک کی مشترکہ ذمہ داری ہے۔ صدارتی اعلان میں دفتر خارجہ اور محکمہ داخلی سلامتی کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ چاڈ، ایران، لیبیا، شمالی کوریا، شام، صومالیہ، وینزویلا اور یمن کے لوگوں کا امریکہ میں داخلہ روکیں تاکہ امریکہ کی سلامتی اور بہبود کا تحفظ ممکن ہو سکے۔ ان پابندیوں کے ساتھ دنیا بھر کے ممالک کا جامع جائزہ لیا جائے گا اور یہ اندازہ لگایا جانا ہے کہ کون سے ممالک معلومات کے تبادلے کے مخصوص طریقہ کار پر پورا اترتے ہیں۔ ہر ملک کے حوالے سے مخصوص پابندیاں عائد کی گئی ہیں جو ہر جگہ سے متعلق خاص حقائق کو ظاہر کرتی ہیں۔

اعلان کے نتیجے میں کوئی ویزا منسوخ نہیں ہو گا اور یہ پابندیاں مستقل نہیں ہیں۔ یہ پابندیاں مشروط ہیں اور جو ممالک امریکیوں کی سلامتی یقینی بنانے کے لیے امریکی حکومت کے ساتھ تعاون کریں گے ان پر یہ پابندیاں اٹھائی جا سکتی ہیں۔ اس وقت دنیا میں بیشتر ممالک نئی شرائط پوری کر رہے ہیں جو کہ ہماری سلامتی یقینی بنانے میں ایک اہم عنصر ہے۔

اعلان کے سیکشن 7 کی رو سے وہ افراد ان پابندیوں کی زد میں نہیں آتے جو اس اعلان کے موثر ہونے کے وقت امریکہ میں تھے یا جن کے پاس امریکہ کا قانونی ویزا موجود تھا خواہ یہ ختم ہی کیوں نہ ہو گیا ہو یا وہ امریکہ چھوڑ ہی کیوں نہ گئے ہوں۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں