rss

صدر ٹرمپ کا ورلڈ اکنامک فورم سے خطاب

中文 (中国) 中文 (中国), English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский, Español Español

وائٹ ہاؤس
پریس سیکرٹری کا دفتر
26 جنوری 2018
برائے فوری اجراء
ورلڈ اکنامک فورم کانگریس سنٹر
ڈیووس، سوئٹزر لینڈ

 
 

سہ پہر 2 بجکر دو منٹ سی ای ٹی

صدر ٹرمپ: شکریہ، کلاؤس، بہت بہت شکریہ۔ ایک ایسے فورم پر موجود ہونا میرے لیے اعزاز کی بات ہے جہاں کاروبار، سائنس، آرٹ، سفارت کاری، اور عالمی امور کے رہنما کئی برسوں سے اس موضوع پر تبادلہ خیالات کرنے کے لیے اکٹھے ہوتے چلے آ رہے ہیں کہ ہم خوشحالی، سلامتی اور امن کو کس طرح فروغ دے سکتے ہیں۔

آج میں یہاں امریکی عوام کے مفادات کی نمائندگی کرنے اور بہتر دنیا کی تعمیر کے لیے امریکہ کی دوستی اور شراکت داری کا اعادہ کر نے کے لیے موجود ہوں۔

اس عظیم فورم پر نمائندگی کرنے والی تمام اقوام کی طرح، امریکہ بھی ایک ایسے مستقبل کی امید لیے ہوئے ہے جس میں ہر کوئی خوشحال ہو سکے اور ہر بچہ تشدد، غربت اور خوف سے آزاد رہ کر پل بڑھ سکے۔

گزشتہ سال کے دوران ہم نے امریکہ میں غیر معمولی پیش رفتیں کی ہیں۔ ہم فراموش کر دی جانے والی کمیونٹیوں کو اوپر اٹھا رہے ہیں، زبردست قسم کے نئے مواقع پیدا کر رہے ہیں اور امریکی خواب کی تعبیر کے لیے ہر ایک امریکی کی، راہ تلاش کرنے میں مدد کر رہے ہیں — یعنی زبردست روزگار، محفوظ گھر اور اپنے بچوں کے لیے بہتر زندگی کا خواب۔

کئی سالوں کے جمود کے بعد امریکہ ایک بار پھر مظبوط اقتصادی ترقی کے دور سے گزر رہا ہے۔ بازارِ حصص ریکارڈ پر ریکارڈ توڑے چلا جا رہا ہے اور میرے انتخاب کے بعد سات کھرب ڈالر سے زائد کی دولت کا اضافہ کر چکا ہے۔ گزشتہ کئی عشروں کے مقابلے میں آج صارفین کا اعتماد، کاروبار کا اعتماد، اور مصنوعات سازی کا اعتماد اعلٰی ترین سطح پر ہے۔

میرے انتخاب کے بعد حکومت نے 24 لاکھ ملازمتیں پیدا کی ہیں اور اس تعداد میں روزافزوں اچھا خاصا اضافہ ہو رہا ہے۔ چھوٹے کاروباروں میں اعتماد اپنی اعلٰی ترین سطح پر ہے۔ بے روزگاری الاؤنس لینے والوں کی تعداد نصف صدی میں سب سے کم ہو گئی ہے۔ افریقی نژاد امریکیوں میں بے روزگاری کی شرح کم ترین سطح پر آ گئی ہے اور ہسپانوی نژاد امریکیوں کی بھی ایسی ہی صورت حال ہے۔

دنیا ایک مضبوط اور خوشحال امریکہ کا احیا دیکھ رہی ہے۔ میں یہاں ایک سادہ پیغام دینے آیا ہوں: امریکہ میں ملازم رکھنے، تعمیر کرنے، سرمایہ کاری کرنے، اور ترقی کرنے کا جتنا بہتر وقت آج ہے اتنا بہتر وقت پہلے کبھی نہیں رہا۔ امریکہ کاروبار کے لیے کھلا ہے، اور ہم ایک بار پھر مسابقتی ملک بن گئے ہیں۔

امریکی معیشت دنیا کی سب سے بڑی معیشت ہے اور ہم نے حال ہی میں امریکی تاریخ میں ٹیکسوں میں اچھی خاصی کٹوتیوں اور اصلاحات کو قانونی شکل دی ہے۔ ہم نے درمیانے طبقے اور چھوٹے کاروباروں کے ٹیکسوں میں بڑی تعداد میں کمی کی ہے تاکہ محنت کش گھرانے اپنی محنت کی کمائی میں سے اور زیادہ پیسہ اپنے پاس رکھ سکیں۔ ہم اپنے ہاں کارپوریٹ ٹیکس کو 35 فیصد سے کم کر کے 21 فیصد کی شرح پر لے آئے ہیں۔ اس کے نتیجے میں لاکھوں کروڑوں محنت کشوں کو اپنے آجروں سے ٹیکس میں چھوٹ کی وجہ سے 3,000 ڈالر تک بونس ملے ہیں۔

ٹیکس میں کٹوتیوں کے قانون سے ایک عام امریکی گھرانے کی اوسط آمدنی میں 4,000 ڈالر سے زائد کے اضافے کی توقع ہے۔ دنیا کی سب سے بڑی کمپنی ایپل نے بیرونی ممالک سے 245 ارب ڈالر کے منافعے امریکہ لانے کے منصوبوں کا اعلان کیا ہے۔ آنے والے پانچ برسوں میں امریکی معیشت میں اُن کی مجموعی سرمایہ کاری 350 ارب ڈالر سے زائد ہوگی۔

اپنے کاروباروں، اپنی ملازمتوں اور اپنی سرمایہ کاریوں کو امریکہ لانے کا یہ بہترین وقت ہے۔ یہ ایک نمایاں حقیقت ہے کیونکہ ہم نے ضابطوں میں اِس حد تک کمی کی ہے جس کے بارے میں صرف سوچا ہی جا سکتا ہے۔ ضابطے خاموشی سے ٹیکس لگانے کے مترادف ہوتے ہیں۔ کئی ایک دیگر ممالک کی طرح، — ہمارے ہاں — غیر منتخب شدہ بیوروکریٹوں نے — مجھ پر یقین کریں – یہ ہر جگہ پائے جاتے ہیں – ہمارے شہریوں پر کاروبار مخالف اور محنت کش مخالف کچل دینے والے ضابطے مسلط کر رکھے ہیں۔ اس سلسلے میں نہ تو کوئی رائے شماری ہوتی ہے، نہ قانونی مباحثہ اور نہ ہی حقیقی احتساب ہوتا ہے۔

امریکہ میں اب وہ دن گزر چکے ہیں۔ میں نے ہر ایک نئے ضابطے کے بدلے دو غیر ضروری ضابطوں کو ختم کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ ہمیں اپنی بہترین توقعات سے بھی بڑھکر کامیابی نصیب ہوئی ہے۔ دو کے مقابلے میں ایک کی بجائے ہم نے ہر ایک نئے ضابطے کے بدلے مشکلات پیدا کرنے والے 22 ضابطوں کو ختم کیا ہے۔ ہم اپنے کاروباروں اور اپنے محنت کشوں کو آزاد کر رہے ہیں تاکہ وہ اتنے پھلیں پھولیں جتنا کہ وہ پہلے کبھی نہیں پھلے پھولے۔ ہم ایک ایسا ماحول پیدا کر رہے ہیں جو سرمائے کے لیے پُرکشش ہو، سرمایہ کاری کی دعوت دے، اور پیداوار کا صلہ دے۔

امریکہ کاروبار کرنے کی جگہ ہے۔ لہذا امریکہ آئیں جہاں آپ اختراع سازی، تخلیق، اور تعمیر کر سکتے ہیں۔ مجھے امریکہ پر یقین ہے۔ امریکہ کے صدر کی حیثیت سے میں اُسی طرح امریکہ کو اولیت دوں گا جیسے دوسرے لیڈروں کو اپنے اپنے ممالک کو اولیت دینا چاہیے۔

تاہم امریکہ پہلے کا یہ مطلب نہیں ہے کہ اکیلا امریکہ ہی ایسا کرے۔ جب امریکہ ترقی کرتا ہے تو دنیا ترقی کرتی ہے۔ امریکی خوشحالی نے دنیا بھر میں روزگار کے بے شمار مواقع پیدا کیے ہیں اور امریکہ میں کسبِ کمال، تخلیقیت، اور جدت طرازی کی تڑپ کے نتیجے میں ایسی اہم دریافتیں ہوئی ہیں جن کی وجہ سے دنیا بھر کے لوگوں کو زیادہ خوشحال اور کئی گنا زیادہ صحت مند زندگیاں گزارنے میں مدد ملی ہے۔

ایسے میں جب ہم امریکہ میں ملازمتوں اور ترقی کے دروازے کھولنے کے لیے اندرونِ ملک اصلاحات لا رہے ہیں تو ہم بین الاقوامی تجارتی نظام کی اصلاح کرنے پر بھی کام کر رہے ہیں تاکہ یہ نظام خوشحالی میں وسیع پیمانے کی شرکت کو فروغ دے اور اُن کو نوازے جو قوانین پر عمل کرتے ہیں۔

اگر کچھ ممالک دوسرے ممالک کی قیمت پر نظام کا استحصال کریں تو ایسی صورت میں ہم آزاد اور کھلی تجارت نہیں کرسکتے۔ ہم آزاد تجارت کی حمایت کرتے ہیں مگر اس کے منصفانہ ہونے کی ضرورت ہے اور اس کے دوطرفہ ہونے کی ضرورت ہے۔ کیونکہ غیرمنصفانہ تجارت، انجامِ کار ہم سب کو نقصان پہنچاتی ہے۔
وسیع پیمانے پر ملکِ دانش کی چوری، صنعتی شعبے میں اعانتی رقومات، اور سرکاری سرپرستی میں موثر اقتصادی منصوبہ بندی سمیت، امریکہ غیرمنصفانہ کاروائیوں پر اب آنکھیں بند نہیں کرے گا۔ یہ اور اسی نوعیت کے دیگر استحصالی رویے عالمی منڈیوں میں بگاڑ پیدا کر رہے ہیں اور نہ صرف امریکہ بلکہ دنیا بھر میں کاروباروں اور محنت کشوں کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔

جیسا کہ ہم دوسرے ممالک کے لیڈروں سے اُن کے اپنے ملکوں کے مفادات کا تحفظ کرنے کی توقع رکھتے ہیں، بالکل اُسی طرح امریکہ کے صدر کی حیثیت سے میں ہمیشہ، اپنے ملک، اپنی کمپنیوں اور اپنے محنت کشوں کے مفادات کا تحفظ کروں گا۔

ہم اپنے تجارتی قوانین کو نافذ کریں گے اور اپنے تجارتی نظام کی سالمیت کو بحال کریں گے۔ ہم صرف منصفانہ اور دوطرفہ بنیادوں پر مساویانہ سلوک کا تقاضا کر کے ہی ایک ایسا نظام قائم کر سکتے ہیں جو نہ صرف امریکہ بلکہ دنیا کی ساری اقوام کے حق میں کام کرے۔

جیسا کہ میں کہہ چکا ہوں کہ امریکہ تمام ممالک کے ساتھ باہمی طور پر مفید، دو طرفہ تجارتی سمجھوتوں پر مذاکرات کے لیے تیار ہے۔ اِس میں انتہائی اہمیت کے حامل ٹی پی پی ممالک بھی شامل ہیں۔ اِن میں سے بہت سے ممالک کے ساتھ ہمارے سمجھوتے پہلے سے ہی موجود ہیں۔ ہم باقیماندہ ممالک کے ساتھ انفرادی طور پر یا شاید ایک گروپ کی شکل میں مذاکرات کرنے پر غور کر سکتے ہیں بشرطیکہ یہ سب کے مفاد میں ہو۔

امریکی اعتماد اور خودمختاری کو بحال کرنے کی خاطر میری انتظامیہ دیگر طریقوں سے بھی تیزی سے اقدامات اٹھا رہی ہے۔ اپنے شہریوں اور کاروباروں کو سستی بجلی فراہم کرنے اور دنیا بھر میں اپنے دوستوں کی توانائی کی سلامتی کو بڑہانے کی خاطر، ہم توانائی کی پیداوار میں خود پرعائد کردہ پابندیاں اٹھا رہے ہیں۔ توانائی فراہم کرنے والے کسی ملک کو کسی دوسرے ملک کو یرغمال نہیں بنانا چاہیے۔ امریکہ زور شور سے واپس آ رہا ہے اور امریکہ کے مستقبل میں سرمایہ کاری کرنے کا یہی وقت ہے۔ ہم نے امریکہ کو مسابقتی ملک بنانے کے لیے ٹیکسوں میں ڈرامائی حد تک کمی کر دی ہے۔ رکاوٹیں پیدا کرنے والے قوانین و ضوابط کو ہم تاریخی تیز رفتاری سے ختم کر رہے ہیں۔ ہم افسر شاہی میں کمی لاکر، اسے ذمہ دار اور قابل احتساب ٹھہرا کر، اصلاحات لا رہے ہیں۔ اور ہم اپنے قوانین کے منصفانہ نفاذ کو یقینی بنا رہے ہیں۔

ہمارے ہاں دنیا کے بہترین کالج اور یونیورسٹیاں ہیں اور ہمارے ہاں دنیا کے بہترین محنت کش ہیں۔ توانائی سستی اور اس کی بہتات ہے۔ امریکہ آنے کا جتنا بہتر وقت آج ہے اتنا بہتر وقت اس سے پہلے کبھی نہیں رہا۔

ہم امریکی افواج پر تاریخی سرمایہ کاریاں کر رہے ہیں کیونکہ سلامتی کے بغیر ہم خوشحال نہیں رہ سکتے۔ سرکش حکومتوں، دہشت گردی، اور منحرف قوتوں سے دنیا کو محفوظ رکھنے کی خاطر، ہم اپنے دوستوں اور اتحادیوں سے اپنے اپنے دفاعوں میں سرمایہ کاری کرنے اور اپنی مالی ذمہ داریاں پوری کرنے کا کہہ رہے ہیں۔ ہماری مشترکہ سلامتی اس بات کا تقاضا کرتی ہے کہ ہم سب اپنا منصفانہ حصہ ادا کریں۔

جزیرہ نمائے کوریا کو جوہری ہتھیاروں سے پاک کرنے کی خاطر زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے میں مہذب دنیا کو متحد کرنے کے لیے میری انتظامیہ کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل اور دنیا بھر میں تاریخی کوششوں کی قیادت کرنے پر فخر ہے۔ ہم شراکت داروں کو ایران کی دہشت گردوں کی حمایت کا سامنا کرنے اور ایران کے جوہری ہتھیاروں کے راستے کو بند کرنے کا کہتے رہیں گے۔

ہم اتحادیوں اور شراکت داروں کے ساتھ مل کر داعش جیسی دہشت گرد جہادی تنظمیوں کو تباہ کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں اور اس میں ہم کامیاب ہو رہے ہیں۔ امریکہ دہشت گردوں کو اپنے علاقوں اور بستیوں پر کنٹرول قائم رکھنے سے روکنے، اُن کی مالی رسد کو ختم کرنے، اور اُن کے بُرے نظریات کا توڑ نکالنے کے لیے ایک وسیع البنیاد اتحاد کی قیادت کر رہا ہے۔

مجھے یہ بتا کر خوشی ہو رہی ہے کہ داعش کو شکست دینے کے لیے قائم کیے گئے اتحاد نے وہ علاقہ سو فیصد واپس لے لیا ہے جس پر عراق اور شام میں کسی وقت اِن قاتلوں کا قبضہ ہوا کرتا تھا۔ اپنی فتوحات کو مستحکم کرنے کے لیے ابھی مزید لڑائی اور کام کی ضرورت ہے۔ ہم یہ بات یقینی بنانے کا تہیہ کیے ہوئے ہیں کہ افغانستان دوبارہ اُن دہشت گردوں کے لیے ایک محفوظ ٹھکانہ نہ بننے پائے جو ہماری سویلین آبادیوں میں وسیع پیمانے پر قتل عام کرنا چاہتے ہیں۔ میں آج یہاں پر نمائندگی کی جانے والی اُن تمام اقوام کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں جنہوں نے اِن انتہائی اہم کاوشوں میں ہمارا ساتھ دیا ہے۔ آپ صرف اپنے شہریوں کو ہی محفوظ نہیں بنا رہے بلکہ آپ لوگوں کی زندگیاں بچا رہے ہیں اور لاکھوں کروڑوں لوگوں کی امیدوں کو بحال کر رہے ہیں۔

جب معاملہ دہشت گردی کا ہو تو ہم وہ سب کچھ کریں گے جو ہماری قوم کو محفوظ رکھنے کے لیے ضروری ہے۔ ہم اپنے شہریوں اور سرحدوں کا دفاع کریں گے۔ قومی اور اقتصادی سلامتی کے ایک حصے کے طور پر ہم اپنے امیگریشن کے نظام کو محفوظ بنا رہے ہیں۔
امریکہ ایک جدید ترین معیشت ہے مگر اس کا امیگریشن کا نظام ماضی میں الجھا ہوا ہے۔ ہمیں امیگریشن کے خاندان در خاندان پھیلے ہوئے موجودہ سلسلے کو میرٹ کی بنیاد پر ملک میں داخلوں کے ایک ایسے نظام سے بہرصورت بدلنا ہے جس میں نئے آنے والوں کا انتخاب اُن کی ہماری معیشت میں اپنا حصہ ڈالنے کی صلاحیت، مالی طور پر اپنی مدد آپ کرنے اور ہمارے ملک کو مضبوط کرنے پر ہو۔

امریکہ کی تعمیرِ نو میں ہم اپنی افرادی قوت کی ترقی کے لیے بھی پورے طور پر پُرعزم ہیں۔ ہم لوگوں کو انحصاری سے نکال کر آزادی کی طرف لے جا رہے ہیں کیونکہ ہمیں غربت کے خاتمے کے ایک بہت سادہ اور بہترین پروگرام کا علم ہے اور وہ ہے ایک اچھی تنخواہ کا چیک۔
کامیابی کے لیے اپنی معیشت میں سرمایہ کاری کرنا ہی کافی نہیں ہوتا۔ ہمیں عوام پر لازماً سرمایہ کاری کرنا چاہیے۔ جب لوگوں کو بھلا دیا جاتا ہے تو دنیا ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو جاتی ہے۔ فراموش کردہ لوگوں کی آوازوں پر کان دھرنے اور اُن کا جواب دینے سے ہی ہم وہ روشن مستقبل تخلیق کر سکتے ہیں جس میں حقیقی طور پر سب لوگ شریک ہوں۔

کسی قوم کی عظمت اُس کی مجموعی پیداوار سے کہیں زیادہ بڑھکر ہوتی ہے۔ قوم کی عظمت اُس کے شہریوں کے [خواص کا] مجموعہ ہوتی ہے: یعنی اُن کی اقدار، تفاخر، محبت، ایثار، اور اُن لوگوں کا کردار جو اپنے ملک کو اپنا گھر کہتے ہیں۔

میری پہلی جی 7 سربراہی کانفرنس سے لے کر جی 20، اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی، اے پی ای سی، تجارت کی عالمی تنظیم، اور آج ورلڈ اکنامک فورم تک، میری انتظامیہ نہ صرف ہر موقع پر موجود چلی آ رہی ہے بلکہ اس نے ہم سب کے اس پیغام کو بھی آگے بڑھایا ہے کہ ہم اُس وقت زیادہ مضبوط ہوتے ہیں جب آزاد ہوتے ہیں، جب خود مختار اقوام مشترکہ مقاصد کے لیے تعاون کرتی ہیں اور جب وہ مشترکہ خوابوں کے لیے تعاون کرتی ہیں۔

اس کمرے میں نمائندگی کرنے والوں کا شمار دنیا بھر کے بہترین شہریوں میں ہوتا ہے۔ آپ قومی رہنما ہیں،آپ بڑی کاروباری شخصیات، بڑے صنعت کار، اور بہت سے شعبوں کے ذہین ترین افراد ہیں۔

آپ سب دلوں کو تبدیل کرنے، زندگیاں بدلنے، اور اپنے اپنے ملکوں کی تقدیریں بنانے کی طاقت رکھتے ہیں۔ اس طاقت کے ساتھ تاہم، آپ پر ایک فرض بھی عائد ہوتا ہے –عوام، محنت کشوں، اور آپ کا اُن گاہکوں کے ساتھ وفاداری کا فرض جنہوں نے آپ کو وہ کچھ بنایا ہے جو کچھ آپ ہیں۔
لہذا آئیے اکٹھے مل کر اپنی طاقت، اپنے وسائل، اور اپنی آوازیں نہ صرف اپنی ذاتوں کے لیے استعمال کرنے کا عزم کریں بلکہ اُن لوگوں کے بوجھ اُٹھانے، امیدیں بڑھانے، اُن کے اپنے خاندانوں، اپنی کمیونٹیوں، اپنی تاریخوں اور اپنے مستقبل کو محفوظ بنانے کے خوابوں کی تعبیر کے لیے استعمال کرنے کا عزم کریں۔

ہم امریکہ میں یہی کام کر رہے ہیں اور اس کے نتائج شک و شبہ سے بالا تر ہیں۔ اسی وجہ سے نئے کاروباروں اور سرمایہ کاری کا سیلاب آیا ہوا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہمارے ہاں آج بیروزگاری کی شرح کئی عشروں کے مقابلے میں کم ترین سطح پر ہے۔ اسی وجہ سے امریکہ کا مستقبل جتنا آج روشن ہے اتنا پہلے کبھی نہیں تھا۔

آج، میں آپ سب کو اُس ناقابل یقین مستقبل کا حصہ بننے کی دعوت دیتا ہوں جو ہم مل کر تعمیر کر رہے ہیں۔

ہمارے میزبانوں کا شکریہ، سامعین میں موجود لیڈروں اور اختراعات لانے والوں کا شکریہ۔ لیکن اس سے بھی زیادہ اہم اُن تمام محنت کش مردوں اور عورتوں کا شکریہ جو بلاناغہ ہر روز، سب کے لیے اس دنیا کو ایک بہتر جگہ بنانے کے لیے اپنے فرائض ادا کرتے ہیں۔ آئیے ہم سب مل کر اُن کو اپنا پیار اور شکریہ پہنچائیں کیونکہ حقیقت میں وہی ہمارے ملکوں کو چلاتے ہیں۔ وہی ہمارے ملکوں کو عظیم بناتے ہیں۔

آپ کا شکریہ اور خدا آپ پر رحمتیں نازل فرمائے۔ آپ کا بہت بہت شکریہ۔ (تالیاں) آپ کا بہت بہت شکریہ۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں