rss

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں شمالی کوریا کے معاملے پر امریکی بریفنگ

English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский, Español Español

امریکی مشن برائے اقوام متحدہ
دفتر اطلاعات و عوامی سفارتکاری
برائے فوری اجرا
12 مارچ 2018

 
 

اقوام متحدہ میں امریکی مشن نے سلامتی کونسل کے ارکان، جمہوریہ کوریا اور جاپان کے لیے آج امریکی قومی سلامتی کے مشیر جنرل ایچ آر مکماسٹر کی جانب سے بریفنگ کا اہتمام کیا۔ اس موقع پر جنرل مکماسٹر نے امریکی حکمت عملی بیان کی اور اس امر پر زور دیا کہ شمالی کوریا پر زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کے لیے عالمی مہم اس وقت تک ضروری ہے جب تک وہ اپنے جوہری ہتھیار ختم نہیں کرتا اور یہ اقدام ان تاریخی مذاکرات کو کامیاب بنانے کے لیے لازمی حیثیت رکھتا ہے۔

جنرل مکماسٹر اور سفیر ہیلی نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ شمالی کوریا کی حکومت پر زیادہ سے زیادہ دباؤ جاری رکھے اور کونسل کے ارکان سے کہا کہ وہ شمالی کوریا کو جوابدہ بنانے کے لیے سلامتی کونسل کی قراردادوں پر مکمل عملدرآمد کے لیے اپنا سیاسی عزم اور وسائل وقف کریں۔

اس موقع پر سفیر ہیلی کا کہنا تھا کہ ‘صدر ٹرمپ اور شمالی کوریا کے رہنما کم کے مابین ملاقات کا اعلان ایک تاریخی موقع ہے جس سے دنیا کو بے حد فائدہ پہنچے گا۔ اگرچہ ہم یہ نہیں کہہ سکتے کہ آیا کم کی پیشکش حقیقی ہے یا نہیں مگر ہم یہ ضرور کہہ سکتے ہیں کہ عالمی برادری کی جانب سے شمالی کوریا کے خلاف دباؤ بڑھانے کی مہم کے بغیر یہ سب کچھ ممکن نہیں تھا جس کا آغاز ٹرمپ انتظامیہ نے کیا۔ اس میں 2017 میں اقوام متحدہ کی جانب سے شمالی کوریا کو جوابدہ بنانے کے لیے تین کڑی قراردادوں کا بھی اہم کردار ہے۔ ہم حالیہ پیش رفت پر آج سلامتی کونسل کو بریفنگ دینے اور اس بات کی اہمیت نمایاں کرنے پر جنرل مکماسٹر کا شکریہ ادا کرتے ہیں کہ شمالی کوریا پر دباؤ برقرار رکھنا اور ان مذاکرات کی کامیابی کے لیے کوششیں کس قدر اہم ہیں۔


اصل مواد دیکھیں: https://usun.state.gov/remarks/8332
یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں