rss

صدر ڈونلڈ جے ٹرمپ امریکی اختراع کی حفاظت کے لیے کوشاں

العربية العربية, English English, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Русский Русский

وائٹ ہاؤس
دفتر سیکرٹری اطلاعات
برائے فوری اجرا
22 مارچ 2018

 

‘میری انتظامیہ میں امریکی خوشحالی کا سرقہ بند ہو جائے گا۔ ہم اپنی صنعت کا دفاع کریں گے اور امریکی کارکن کے لیے یکساں حالات کار تخلیق کریں گے۔ یہ قطعی فیصلہ ہے’ صدر ڈونلڈ جے ٹرمپ

امریکی برتری کا تحفظ: صدر ڈونلڈ جے ٹرمپ امریکی اختراع کے لیے نقصان دہ چینی پالیسیوں اور افعال سے نمٹنے کے لیے اقدامات اٹھا رہے ہیں۔

  • صدر نے امریکی ٹیکنالوجی کے غیرمنصفانہ اور نقصان دہ طور سے حصول کے لیے چینی اقدامات، پالیسیوں اور ضابطہ ہائے عمل کا جواب دینے کے لیے اپنی انتظامیہ کو بہت سے اقدامات پر غور کرنے کی ہدایت دی ہے۔
  • صدر ٹرمپ کی انتظامیہ ایسی مخصوص اشیا پر 25 فیصد اضافی ٹیرف عائد کرنے کے لیے عوامی رائے کے حصول کی تجویز دے گی جنہیں چین کی غیرمنصفانہ تجارتی پالیسی کی معاونت حاصل ہے۔
  • مجوزہ ٹیرف فضائی صنعت، اطلاعاتی و مواصلاتی ٹیکنالوجی اور مشینری کے شعبے پر عائد ہوں گے۔
  • ‘یوایس ٹی آر’ عالمی تجارتی تنظیم (ڈبلیو ٹی او) میں تنازعات کی کارروائی کے ذریعے چین کے ٹیکنالوجی کی لائسنسنگ کے حوالے سے امتیازی اقدامات کا مقابلہ کرے گا۔
  • محکمہ خزانہ دوسرے اداروں کی مشاورت سے حساس امریکی ٹیکنالوجی میں چینی سرمایہ کاری پر پابندیاں تجویز کرے گا۔

امریکی اختراع کے لیے خطرہ: صدر ڈونلڈ جے ٹرمپ کے اقدامات کی بنیاد بڑی حد تک اپنی انتظامیہ کی جانب سے سیکشن 301 کے حوالے سے تحقیقات کے نتائج پر ہے۔

  • اگست میں صدر ٹرمپ کی انتظامیہ نے ٹیکنالوجی کی منتقلی، انٹلیکچوئل پراپرٹی اور اختراع سے متعلق چینی اقدامات، پالیسیوں اور ضابطہ عمل کے بارے میں تحقیقات شروع کی تھیں۔
  • امریکی تجارتی نمائندے (یوایس ٹی آر) نے تجارتی قانون 1974 کے سیکشن 301 کے تحت ان تحقیقات کی قیادت کی جو ‘یوایس ٹی آر’ کو صدارتی ہدایات کی موجودگی میں غیرمنصفانہ تجارتی ضابطہ ہائے عمل یا ایسی پالیسیوں کے خاتمے کا اختیار دیتا ہے جو امریکی تجارت پر بوجھ ہوں۔
  • 2013 کے بعد یہ سیکشن 301 کے تحت پہلی تحقیقات تھیں۔
  • ‘یوایس ٹی آر’ نے ماہرین تعلیم، تھنک ٹینکس، قانونی اداروں، تجارتی انجمنوں نیز امریکی کمپنیوں اور کارکنوں کی جانب سے موصول ہونے والی شہادتوں اور تبصروں کی بنیاد پر جامع تحقیقات کیں۔
  • تحقیقات سے یہ سامنے آیا کہ چین امریکی کمپنیوں کو اپنی ٹیکنالوجی چینی اداروں کو منتقل کرنے پر مجبور کرنے یا اس سلسلے میں دباؤ ڈالنے کی غرض سے غیرملکی ملکیتی پابندیوں جیسا کہ مشترکہ کاروبار کے تقاضوں اور انتظامی جائزوں سے کام لیتا ہے۔
  • چین غیرملکی کمپنیوں سے ایسے اقدامات کا تقاضا کرتا ہے جن کے ذریعے اسے متبادل توانائی والی گاڑیوں کی مارکیٹ تک رسائی مل سکے۔ اس طرح وہ بنیادی ٹیکنالوجی مشترکہ کاروبار کو منتقل کرتا اور پوری گاڑی کی تیاری کی ٹیکنالوجی حاصل کرتا ہے۔
  • تحقیقات سے یہ سامنے آیا کہ چین امریکی کمپنیوں پر دباؤ ڈالتا ہے کہ وہ چینی کمپنیوں کو مارکیٹ سے الگ شرائط پر اپنی ٹیکنالوجی استعمال کرنے کی اجازت دیں۔
  • چین انٹلیکچوئل پراپرٹی کی لائسنسنگ اور غیرملکی ٹیکنالوجی اپنے ہاں لانے کے لیے معاہداتی پابندیاں عائد کرتا ہے تاہم دو چینی کاروباری اداروں کے مابین معاہدے پر ایسی پابندیاں عائد نہیں کی جاتیں۔
  • تحقیقات اس نتیجے پر پہنچیں کہ چین امریکی کمپنیوں سے چینی اداروں کو بڑے پیمانے پر ٹیکنالوجی کی منتقلی کے لیے ہدایات جاری کرتا ہے اور غیرمنصفانہ طور سے سرمایہ کاری اور تحصیل میں سہولت دیتا ہے۔
  • چینی حکومت کی پشت پناہی سے چلنے والے فنڈ نے ایک چینی سرمایہ کار کنسورشیم ‘ایپیکس ٹیکنالوجی اینڈ کمپنی’ کو کمپیوٹر پرنٹر بنانے والے امریکی ادارے کے حصول میں مدد دی جس نے قبل ازیں سند ایجاد کے حوالے سے خلاف ورزی پر ایپکس کے خلاف مقدمہ کیا تھا۔
  • تحقیقات سے یہ سامنے آیا کہ چین امریکی کمپنیوں کی حساس تجارتی معلومات جیسا کہ تجارتی رازوں تک رسائی کے لیے سائبر مداخلت کا ارتکاب اور اس کی معاونت کرتا ہے۔
  • 2014 میں امریکہ نے چین کی جانب سے تجارتی فوائد کے حصول کی خاطر امریکی اداروں اور ایک مزدور تنظیم کے خلاف سائبر جاسوسی پر پانچ چینی عسکری ہیکرز کو ذمہ دار قرار دیا تھا۔
  • ایک بین الاداری تجزیے میں اندازہ لگایا گیا ہے کہ چین کے غیرمنصفانہ اقدامات، پالیسیوں اور ضابطہ ہائے عمل سے امریکہ کو ہر سال اربوں ڈالر نقصان ہوتا ہے۔

غیرمنصفانہ تجارت کا مقابلہ: صدر ٹرمپ نے یہ بات واضح کر دی ہے کہ ان کی انتظامیہ امریکی تجارت کے لیے نقصان دہ غیرمنصفانہ تجارتی ضابطہ ہائے عمل کا مقابلہ کرے گی۔

  • صدر ٹرمپ نے عہدہ سنبھالنے کے بعد ایسے غیرمنصفانہ تجارتی ضابطہ ہائے عمل کا مقابلہ کرنے کا عندیہ دیا تھا جنہوں نے طویل عرصہ تک امریکی تجارت کو نقصان پہنچایا ہے۔
  • صدر کی انتظامیہ نے 2017 مں اینٹی ڈمپنگ اور ہم پلہ محصول کے حوالے سے 82 تحقیقات کی تھیں۔
  • یہ 2016 کے مقابلے میں ایسی تحقیقات میں 58 فیصد اضافہ ہے۔
  • جنوری میں صدر نے بڑے حجم کی گھریلو واشنگ مشینوں اور شمسی سیلوں کی درآمد پر نئے حفاظتی ٹیرف کا اعلان کیا تھا۔
  • ٹیرف پر عملدرآمد کے لیے صدر کے فیصلے کی بنیاد دوفریقی اور غیرجانبدارانہ تجارتی کمیشن کی سفارشات پر تھی۔
  • صدر ٹرمپ کی انتظامیہ نے غیرمنصفانہ تجارتی ضابطہ ہائے عمل کے خلاف ڈبلیو ٹی او میں دعوے جیتے اور منصفانہ تجارتی قوانین کے نفاذ کا اپنا حق برقرار رکھا۔
  • فروری 2018 میں ‘یوایس ٹی آر’ نے چین کی جانب سے امریکی پولٹری برآمدات پر غیرمنصفانہ اینٹی ڈمپنگ اور ہم پلہ محصولات کے خلاف ڈبلیو ٹی او میں کیس جیتا اور چین نے ان محصولات کے خاتمے کا اعلان کیا۔
  • نومبر 2017 میں امریکہ نے انڈونیشیا کی جانب سے امریکی زرعی پیداوار کی برآمدات کو محدود کرنے کے لیے غیرمنصفانہ درآمدی لائسنسنگ کے حوالے سے ڈبلیو ٹی او میں ایک دعویٰ جیتا۔
  • اکتوبر 2017 میں ڈبلیو ٹی او کا پینل اس نتیجے پر پہنچا کہ صارفین کو محفوظ طریقے سے مچھلیاں پکڑنے کے حوالے سے معلومات کی فراہمی کے لیے بنائے گئے امریکی قوانین ڈبلیو ٹی او کے معیارات سے مطابقت رکھتے ہیں۔
  • ستمبر 2017 میں ڈبلیو ٹی او نے یورپی یونین کی جانب سے یہ الزامات مسترد کر دیے کہ بوئنگ کو ممنوعہ امدادی قیمت مہیا کی جا رہی ہے۔
  • جون 2017 میں ڈبلیو ٹی او کے پینل نے یورپی یونین کی جانب سے قریباً ایسے تمام دعوے مسترد کر دیے کہ امریکہ میں بوئنگ کو دی جانے والی مبینہ امدادی قیمت سے ایئربس کے ساتھ سنگین ناانصافی ہو رہی ہے۔ ڈبلیو ٹی او نے یہ اخذ کیا کہ جن 29 پروگرامز پر اعتراضات اٹھائے گئے تھے ان میں 28 عالمی تجارتی تنظیم کے قوانین سے مطابقت رکھتے ہیں۔

یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں