rss

روسی انٹیلی جنس افسروں کی امریکہ سے بیدخلی پر سفیر ہیلی کا بیان

English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский, Español Español, 中文 (中国) 中文 (中国)

امریکی مشن برائے اقوام متحدہ
دفتر اطلاعات و عوامی سفارتکاری
برائے فوری اجرا
26مارچ 2018

 
 

آج امریکہ نے اقوام متحدہ میں روسی مشن کے لیے کام کرنے والے 12 انٹیلی جنس اہلکاروں کی بیدخلی کا عمل شروع کر دیا ہے جنہوں نے امریکہ میں رہنے کا ناجائز فائدہ اٹھایا۔ ایک جائزے کے بعد ہم اس نتیجے پر پہنچے کہ 12 انٹیلی جنس اہلکار جاسوسی کی سرگرمیوں میں ملوث تھے جو کہ ہماری قومی سلامتی کے لیے نقصان دہ ہیں۔ ہمارے اقدامات اقوام متحدہ کے ہیڈکوارٹر کے معاہدے سے مطابقت رکھتے ہیں۔

اس سے ہٹ کر صدر ٹرمپ نے 48 روسی انٹیلی جنس حکام کی بیدخلی اور سیاٹل میں روسی قونصل خانہ بند کرنے کا حکم بھی جاری کیا ہے۔

سفیر ہیلی نے اس حوالے سے کہا ہے کہ ‘صدر کی جانب سے آج کے فیصلے سے ظاہر ہوتا ہے کہ روس کو اپنے افعال کے نتائج بھگتنا ہوں گے۔ شام میں ہونے والے مظالم میں حصہ داری اور یوکرین میں غیرقانونی اقدامات کی طرح دنیا بھر میں تخریبی طرز عمل سے بڑھ کر اب اس نے ہمارے ایک قریب ترین اتحادی کی سرحدی حدود میں کیمیائی ہتھیار استعمال کیا ہے۔روس یہاں نیویارک میں اقوام متحدہ کو ہماری ہی سرحدوں میں اپنی خطرناک سرگرمیوں کے لیے محفوظ ٹھکانے کے طور پر استعمال کرتا ہے۔ آج امریکہ اور ہمارے بہت سے دوست یہ واضح پیغام دے رہے ہیں کہ ہم روس کے غلط رویے سے صرف نظر نہیں کریں گے۔


اصل مواد دیکھیں: https://usun.state.gov/remarks/8349
یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں