rss

سرکاری سطح پر اشیا و خدمات کی خرید میں انسانی بیوپار کے خلاف تحفظاتی اقدامات کو مضبوط بنانا

中文 (中国) 中文 (中国), English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский, Español Español

پی ڈی ایف – ڈاؤن لوڈ کریں

امریکی محکمہ خارجہ
انسانی سمگلنگ کی نگرانی اور خاتمے کا دفتر
واشنگٹن ڈی سی
جون 2018

سرکاری سطح پر اشیا و خدمات کی خرید میں انسانی بیوپار کے خلاف تحفظاتی اقدامات کو مضبوط بنانا

حکومتوں کی طرف سے اشیا اور خدمات کی سرکاری طور پر خریداری کا عالمی معیشت میں نمایاں حصہ ہے اور اس سے حکومتوں کو ذمہ دارانہ کاروباری طریقہائے کار کے فروغ، نجی شعبے سے اپنی توقعات میں اضافے اور عالمی منڈیوں میں تبدیلی کا اہم موقع میسر آتا ہے۔

سرکاری سطح پر اشیا کا حصول استحکام میں اضافے سے لے کر چھوٹے اور اقلیتوں کے ملکیتی کاروباروں کے حوالے سے غیرامتیازی طریقہائے کار کے فروغ تک بہت سی پالیسیوں کی ترویج میں استعمال ہو سکتا ہے اور عموماً ہوتا بھی ہے۔ اسی طرح حکومتیں اشیا اور خدمات کی خریدااری کو انسانی بیوپار کے خلاف کوششیں مضبوط بنانے اور ان کی مدد کے لیے بھی استعمال کر سکتی ہیں۔

حکومتیں اشیا و خدمات کے حصول کے اپنے موجودہ ڈھانچے کا جائزہ لینے، مزدوروں کے حقوق اور انسانی بیوپار سے متعلق ماہرین کی آراء شامل کرنے اور حکومتی ٹھیکوں میں کام کرنے والے محنت کشوں کو استحصال سے بچانے کی پالیسیوں پر عملدرآمد کے اقدامات اٹھا سکتی ہیں۔ ایسی پالیسیوں میں ناصرف حکومتی ٹھیکہ داروں اور ذیلی ٹھیکہ داروں کو انسانی بیوپار سے روکا جانا چاہیے بلکہ ایسی سرگرمیوں کی بھی ممانعت ہونی چاہیے جو انسانی بیوپار میں مدد دیتی ہیں۔

وفاقی سطح پر اشیا و خدمات کے حصول کا ضابطہ، ”انسانی بیوپار کا خاتمہ”

امریکہ میں حکومتی ملازمین اور ٹھیکے پر کام کرنے والوں کو انسانی بیوپار سے روکنے کی پالیسی ایک طویل عرصہ سے موجود ہے۔ اس پالیسی کو 2015 میں اس وقت مزید موثر بنایا گیا جب اشیا و خدمات کے حصول کے وفاقی ضابطے (ایف اے آر) بعنوان ‘انسانی بیوپار کا خاتمے’ نے وفاقی ٹھیکہ داروں اور ذیلی ٹھیکہ داروں کے لیے انسانی بیوپار سے متعلق ممانعات پر عملدرآمد کیا۔

اس ضابطے میں ٹھیکہ داروں اور ذیلی ٹھیکہ داروں کے لیے یہ ضروری قرار دیا گیا ہے کہ جب انہیں انسانی بیوپار یا اس سے متعلقہ ممنوعہ کاموں کے متعلق قابل اعتبار معلومات ملیں تو وہ اشیا و خدمات کے حصول سے متعلق حکومتی اہلکار کو مطلع کریں اور فریقین کو بتائیں کہ وفاقی ادارے اس حوالے سے انسدادی اقدامات اٹھا سکتے ہیں جن میں ضوابط پر عمل نہ ہونے کی پاداش میں ٹھیکے کا خاتمہ بھی شامل ہو سکتا ہے۔

ان ضوابط کا اطلاق تمام ٹھیکوں پر ہوتا ہے اور تمام ٹھیکہ داروں اور ذیلی ٹھیکہ داروں کو درج ذیل خلاف ورزیوں کی ممانعت کی گئی ہے:

  • انسانی بیوپار کی سنگین اقسام میں شمولیت اختیار کرنا۔
  • ٹھیکے پر کام کے دوران رقم کے عوض جنسی خدمات حاصل کرنا۔
  • ٹھیکے پر کام کے دوران جبری مشقت استعمال کرنا۔
  • کسی ملازم کی شناختی یا امیگریشن کی دستاویزات ضائع کرنا، چھپانا، ضبط کرنا یا بصورت دیگر انہیں اِن دستاویزات تک رسائی دینے سے انکار کرنا۔
  • اشیا و خدمات کے حصول کے لیے گمراہ کن یا دھوکے پر مبنی طریقہائے کار استعمال کرنے۔
  • محنت کشوں سے متعلق مقامی قوانین کی پابندی نہ کرنے والے اداروں کو بھرتی کے لیے استعمال کرنا۔
  • ملازمین سے بھرتی کے پیسے وصول کرنا۔
  • ٹھیکے کے اختتام پر ملازمین کو واپسی کی سفری کی سہولتیں مہیا نہ کرنا۔
  • میزبان ملک کی رہائشی اور تحفظاتی معیارات سے مطابقت نہ رکھنے والی رہائشیں ملازمیں کو دینا یا ان بندوبست کرنا۔
  • اگر قوانین یا معاہدے کے تحت ضروری ہو تو ملازمت کا معاہدہ تحریری طور پر نہ مہیا کرنا۔

مزید براں ‘ایف اے آر’ قانون ایسے تمام ٹھیکوں سے احکامات کی تکمیل کا تقاضا کرتا ہے جن کی مالیت پانچ لاکھ ڈالر سے زیادہ ہو اور انہیں بیرون ملک مکمل کیا جانا ہو (اس میں تجارتی طور پر دستیاب فوری تیار ہونے والی اشیا شامل نہیں ہیں) ہر سال ہر ٹھیکے دار کو یہ تصدیق کرنا ہوتی ہے کہ اس نے ہر قسم کی ممنوعہ سرگرمیوں کی روک تھام کے منصوبے پر عملدرآمد کیا ہے۔ اِس منصوبے کے تحت اگر کہیں کوئی ذیلی ٹھیکے دار ممنوعہ سرگرمیوں کا ارتکاب کرتا ہوا پایا جائے تو اس کی نگرانی کی جاتی ہے، نشاندہی کی جاتی ہے اور اس کے ٹھیکے کو ختم کر دیا جاتا ہے۔ ایسے تعمیلی منصوبوں میں درج ذیل باتوں کا ہونا ضروری ہے:

  • ٹھیکے داروں کے ملازمین کو انسانی بیوپار سے متعلق سرگرمیوں کی روک تھام کی بابت پالیسی سے آگاہی کا پروگرام۔
  • ملازمین کے لیے کسی انتقامی کارروائی کے خوف سے بے نیاز ہو کر ایسے کاموں کی اطلاع کرنے کا طریقہ طے کرنا جو ایف اے آر کے قوانین سے مطابقت نہ رکھتے ہوں۔
  • بھرتیوں اور معاوضے کی ادائیگیوں کا منصوبہ جس میں بھرتی کرنے والے اداروں کو صرف تربیت یافتہ ملازمین رکھنے کی اجازت دی گئی ہو، جو ملازمین سے نوکری کے عوض رقم لینے کو روکتا ہو اور جس سے یہ یقین دہانی ہوتی ہو کہ ملازمین کی تنخواہیں میزبان ملک کے قانونی تقاضوں کے مطابق ہیں یا اگر کوئی فرق ہے تو اس کی وضاحت کرنا۔
  • رہائشی منصوبہ جس میں یہ دیکھا جائے کہ ٹھیکے دار کی جانب سے سے مہیا کردہ یا بندوبست کردہ رہائشی سہولیات میزبان ملک میں رہائش اور تحفظ کے معیارات سے کس حد تک مطابقت رکھتی ہیں۔
  • کسی بھی سطح پر ایجنٹوں اور ذیلی ٹھیکے داروں کو انسانی بیوپار میں شمولیت سے روکنے کے طریقہائے کار اور ایسی سرگرمیوں میں ملوث کسی بھی ایجنٹ یا ذیلی ٹھیکیداروں کی نگرانی، نشاندہی اور ٹھیکے کی منسوخی کے طریقہائے کار۔

اس ضابطے پر عمل نہ کرنے والے ٹھیکے دار کو نتیجے میں معطلی یا پابندی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

اشیا و خدمات کے حصول کا وفاقی ضابطہ، ”بچوں سے جبری یا باضابطہ مشقت سے کام لے کر تیار کی جانے والی اشیا کے حصول کی ممانعت”

ایف اے آر قانون کے تحت یہ ضروری ہے کہ اشیا کی فراہمی کے حوالے سے درخواستیں طلب کرنے اور ٹھیکے دینے والے حکومتی اہلکار، محکمہ محنت کی جانب سے تیار کی گئی ” بچوں سے جبری یا باضابطہ مشقت کے نتیجے میں تیار کروائی جانے والی اشیا کی فہرست” کو مدنظر رکھیں۔ اگر فراہم کی جانے والی کوئی چیز اس فہرست میں موجود ہو تو ٹھیکے دار کو تصدیق کرنا ہو گی کہ وہ ایسے ممالک (کچھ مستثنیات کے علاوہ)  سے حاصل ہونے والی کوئی چیز فراہم نہیں کرے گا جس کا نام اس فہرست میں موجود ہو، یا اسے یہ تصدیق کرنا ہو گی کہ اس نے نیک نیتی سے یہ تعین کیا ہے کہ اس ٹھیکے کے تحت فراہم کی جانے والی کسی چیز کو [معدنی] کان سے نکالنے، تیاری یا بنانے میں بچوں سے جبری یا باضابطہ مشقت کا استعمال نہیں کیا گیا۔

اگر ٹھیکوں سے متعلق امریکی حکومت کے متعلقہ عہدیدار کے پاس یہ یقین کرنے کی معقول وجہ موجود ہو کہ کسی شے کی تیاری میں بچوں سے جبری یا باضابطہ طور پر مشقت سے کام لیا گیا ہے تو اس کے لیے ضروری ہے کہ وہ  ادارے کے انسپکٹر جنرل، اٹارنی جنرل یا وزیرخزانہ سے رابطہ کرے۔

ضابطے پر عمل نہ کرنے کے نتیجے میں ٹھیکہ منسوخ ہو سکتا ہے، ٹھیکے دار کو معطل کیا جا سکتا ہے یا اس پر ٹھیکے لینے پر تین برس کی پابندی لگائی جا سکتی ہے۔

اشیا و خدمات کے عالمگیر ترسیلی سلسلے میں انسانی بیوپار کی نشاندہی اور روک تھام کے ذرائع اور وسائل سے آگاہی اور ایف اے آر قانون "انسانی بیوپار  کے خاتمے” پر عملدرآمد سے متعلق نمونے کے منصوبے کا جائزہ لینے کے لیے براہ مہربانی یہ ویب سائٹ ملاحظہ فرمائیے:  www.ResponsibleSourcingTool.org

اشیا و خدمات کے عالمگیر ترسیلی سلسلے میں جبری مشقت اور دیگر مشقتی زیادتیوں سے نمٹنے کے لیے موثر سماجی عملدرآمدی نظام ترتیب دینے کی غرض سے ذرائع اور وسائل کی بابت جاننے کے لیے یہ ویب سائٹ ملاحظہ فرمائیے:  www.dol.gov/ilab/complychain


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں