rss

وزیر خارجہ مائیک پومپئو کا بیان یروشلم میں امریکی سفارت خانے اور قونصلیٹ جنرل کا ادغام

English English, العربية العربية, Français Français, Português Português, Русский Русский, Español Español

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
18 اکتوبر 2018

 

مجھے یہ اعلان کرتے ہوئے خوشی ہے کہ 14 مئی کو اسرائیل میں امریکی سفارت خانہ یروشلم میں کھولے جانے کے بعد ہم نے یروشلم میں امریکی سفارت خانے اور قونصلیٹ جنرل کو واحد سفارتی مشن کے طور پر مدغم کر کے اہم اہلیتوں کے حصول اور اپنی کارگزاری مزید موثر بنانے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔ میں نے اسرائیل میں اپنے سفیر ڈیوڈ فرائیڈمین سے اس ادغام میں رہنمائی کرنے کو کہا ہے۔

ہم یروشلم میں امریکی سفارت خانے میں فلسطینی امور سے متعلق ایک نئے یونٹ کے ذریعے ناصرف مغربی کنارے اور غزہ بلکہ یروشلم میں رہنے والے فلسطینیوں کے ساتھ وسیع تر رپورٹنگ، روابط  اور پروگرامنگ جاری رکھیں گے۔ یہ یونٹ یروشلم میں ایگرون روڈ کے علاقے سے اپنی سرگرمیاں انجام دے گا۔

اس فیصلے کے پیچھے ہماری جانب سے اپنی کارروائیوں کی استعداد اور تاثیر بہتر بنانے کی عالمگیر کوششیں کارفرما ہیں۔ یہ یروشلم، مغربی کنارے یا غزہ کی پٹی کے حوالے سے امریکی حکمت عملی میں تبدیلی کا اشارہ نہیں ہے۔ جیسا کہ گزشتہ برس دسمبر میں صدر نے اعلان کیا تھا امریکہ حدود یا سرحدوں سمیت خطے کی حتمی حیثیت سے متعلق امور  پر غیرجانبدار رہے گا۔ یروشلم میں اسرائیلی خودمختاری کی مخصوص حدود فریقین کے مابین حتمی حیثیت سے متعلق مذاکرات سے مشروط ہیں۔

امریکی انتظامیہ ایسے پائیدار اور جامع امن کے حصول کے لیے کڑے طور سے پرعزم ہے جس سے اسرائیل اور فلسطینیوں کو روشن مستقبل میسر آئے۔ ہم مستقبل میں فلسطینی عوام اور قیادت کے ساتھ شراکت اور بات چیت جاری رکھنے کے منتظر ہیں۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں