rss

وزیر خارجہ پومپئو کا خلیجی ممالک کا دورہ

Facebooktwittergoogle_plusmail
Español Español, English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Русский Русский

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
11 جنوری 2019

 
 

وزیر خارجہ پومپیو کا خلیجی ممالک کا دورہ
شراکتوں کا فروغ، ایران پر دباؤ کی مہم میں حمایت کا حصول اور علاقائی مسائل کے نئے حل
حقائق نامہ

امریکہ اور خلیجی ممالک کے مابین مضبوط شراکتوں کا فروغ

• امریکہ بحرین، کویت، اومان، قطر، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے ساتھ اپنی شراکتوں سے پوری طرح وابستہ ہے۔

• یہ خلیجی شراکتیں مشترکہ علاقائی مقاصد کے حصول کے لیے اہم ہیں۔ ان مقاصد میں داعش کی شکست، بنیاد پرست اسلامی دہشت گردی سے نمٹنا، توانائی کی عالمگیر ترسیلات کا تحفظ اور ایرانی جارحیت کو واپس پھیرنا شامل ہیں۔

• تمام خلیجی ممالک داعش کو شکست دینے کے لیے قائم عالمگیر اتحاد میں شراکت دار ہیں اور انہوں نے شام اور عراق کے لیے امداد کی مد میں اربوں ڈالر دیے ہیں۔

• وزیر خارجہ امریکہ قطر اور امریکہ کویت سٹریٹیجک ڈائیلاگ میں امریکی وفود کی قیادت کریں گے۔ اس ڈائیلاگ کا مقصد دفاع، انسداد دہشت گردی، تجارت و سرمایہ کاری، توانائی، تعلیم اور ثقافت سمیت اہم شعبہ جات میں ہمارے باہمی تعاون کو وسعت دینا ہے۔

o امریکہ کو قطر میں بدستور سب سے بڑے غیرملکی سرمایہ کار اور درآمدات کے واحد سب سے بڑے ذریعے کی حیثیت حاصل ہے۔ 120 سے زیادہ امریکی کمپنیاں قطر میں کام کر رہی ہیں۔

o 1991 میں کویت کی آزادی کے بعد سے امریکہ نے اس کی خودمختاری، سلامتی اور آزادی کی حمایت جاری رکھی ہے اور بدلے میں کویت علاقائی استحکام میں تعاون کرتا ہے۔

ایران کے خلاف دباؤ کی مہم میں حمایت کا حصول

• ایک متحدہ خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) علاقائی امن، خوشحالی، سلامتی اور استحکام میں کلیدی حیثیت رکھتی ہے اور علاقائی استحکام کو ایرانی حکومت کی صورت میں لاحق واحد سب سے بڑے خطرے سے نمٹنے کے لیے اس کا کردار لازمی اہمیت کا حامل ہے۔

• وزیر خارجہ خطے بھر میں ایرانی حکومت کے تباہ کن طرزعمل کو روکنے اور مجوزہ ‘مشرق وسطیٰ تزویراتی اتحاد’ کو ترقی دینے کے لیے ‘جی سی سی’ کے علاوہ مصر اور اردن کے رہنماؤں کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔

• بحرین ایران کی ضرررساں سرگرمیوں سے نمٹنے کا سرگرم حامی ہے اور ایرانی پاسداران انقلاب (آئی آر جی سی) کے آلہ کاروں کو سامنے لانے اور ان سے نمٹنے کے لیے امریکہ کے ساتھ قریبی تعاون کرتا ہے۔ بحرین ایران کی جانب سے پابندیوں سے بچ نکلنے کے طریقوں کی تحقیقات اور ان پر قابو پانے نیز غیرقانونی سمندری سرگرمی کی روک تھام کی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے۔

• متحدہ عرب امارات ایسے غیرقانونی مالیاتی منصوبوں کو ہدف بنانے کے لیے امریکہ کے ساتھ قریبی تعاون کر رہا ہے جن سے ایرانی حکومت کو فائدہ پہنچتا ہے۔

• کویت ایران پر پابندیوں پر عملدرآمد کی بغور نگرانی کرتا ہے اور پابندیوں سے فرار کی روک تھام کے لیے امریکہ کے ساتھ قریبی تعاون کر رہا ہے۔

• اومان پابندیوں کی خلاف ورزی اور سامان کی غیرقانونی منتقلیوں کی روک تھام کے لیے امریکہ کے ساتھ قریبی تعاون کرتا ہے۔

• قطر نے ایران کے خلاف پابندیوں پر عملدرآمد کے معاملے میں اہم اقدامات اٹھائے ہیں۔

• سعودی عرب خطے میں ایرانی موجودگی اور اثرورسوخ میں توسیع کا مقابلہ کرنے کے لیے امریکہ کے ساتھ قریبی تعاون کرتا ہے۔

خطے کے انتہائی مشکل مسائل پر پیش رفت کی رفتار میں تیزی

• وزیر خارجہ ہمارے خلیجی شراکت داروں پر واضح کریں گے کہ وہ خطے کو درپیش انتہائی اہم مسائل کے حل میں کون سے کلیدی کردار ادا کر سکتے ہیں۔ ان مسائل میں یمن میں ایرانی پشت پناہی سے سرگرم حوثی باغیوں کا پیدا کردہ انسانی بحران، شامی مسئلے کے اس انداز میں پرامن سفارتی حل کی اہم ضرورت جس میں شامی عوام کی خواہش کا احترام کیا جائے اور ملک سے تمام ایرانی فوجیوں کا اخراج شامل ہو، افغان تنازع کے ایسے مذاکراتی تصفیے کے لیے کوششیں جس میں اس امر کی ضمانت ملے کہ افغانستان دوبارہ کبھی عالمی دہشت گردی کا مرکز نہیں بنے گا، لیبیا میں اقوام متحدہ کی معاونت سے سیاسی عمل کی حمایت، میزائلوں اور دوسرے ہتھیاروں کے پھیلاؤ خصوصاً ان کے غیرریاستی کرداروں کے ہاتھ لگنے کے مسئلے پر قابو پانا، خطے بھر میں داعش کی مکمل شکست اور دہشت گردی کی روک تھام کے لیے عالمگیر کوشش شامل ہیں۔

• حال ہی میں سویڈن میں اقوام متحدہ کے زیرقیادت یمن بارے سیاسی مشاورت کے اہتمام میں سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، کویت اور اومان نے اہم کردار ادا کیا۔ وزیر خارجہ اس تنازع کے سیاسی حل بارے مزید پیش رفت کی حوصلہ افزائی کے لیے ان تمام ممالک سے رابطہ کریں گے۔

• اومان خطے میں امن کے فروغ کے مواقع کا متلاشی ہے۔ وزیر خارجہ امریکہ کی ایران مخالف مہم اور خطے میں شراکتیں بشمول مشرق وسطیٰ کے تزویراتی اتحاد کو مضبوط بنانے، مشرق وسطیٰ میں امن کوششوں کی حوصلہ افزائی اور یمن میں آویزشوں کے خاتمے میں معاونت کے سلسلے میں بات چیت کریں گے۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں