rss

جنگ، خشک سالی اور دیگر قدرتی آفات سے متاثرہ افغانوں کے لیے اضافی امریکی امداد کا اعلان

English English, हिन्दी हिन्दी

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
26 مارچ 2019

 
 

امریکہ نے افغانستان بھر میں غیرمحفوظ لوگوں، بے گھر افراد اور واپس آنے والے پناہ گزینوں بشمول خطے میں افغان مہاجرین کے لیے 61 ملین ڈالر سے زیادہ اضافی انسانی امداد کا اعلان کیا ہے۔

افغانستان بھر میں جاری جنگ اور مسلسل قدرتی آفات کے باعث لوگ گھربار چھوڑنے پر مجبور ہیں جس سے ان کی مدد کے حوالے سے ضروریات جنم لے رہی ہیں۔ نئی مالی معاونت کی بدولت افغانستان کے انتہائی متاثرہ علاقوں میں رہنے والے لوگوں کے لیے خوراک کی ہنگامی امداد، غذائیت سے متعلق خدمات، حفظان صحت کے سامان، پینے کے صاف پانی، بیت الخلا تک رسائی اور تحفظ کی فراہمی ممکن ہو پائے گی۔ ان میں وہ افغان مہاجرین بھی شامل ہیں جنہیں افغان علاقوں میں دوبارہ آباد ہونے میں مشکلات کا سامنا ہے۔

اس نئی مالی معاونت کے ساتھ امریکہ افغانستان کے لوگوں کی مدد کرنے والا دنیا کا واحد سب سے بڑا عطیہ دہندہ بن گیا ہے جس نے مالی سال 2018 سے اب تک انہیں 293 ملین ڈالر سے زیادہ امداد دی ہے۔ یہ اضافی امداد افغان عوام کے لیے امریکہ کی جاری امداد کی تکمیل کرتی ہے جس میں صاف پانی کی فراہمی، نکاسی آب کی بہتر سہولیات، پناہ، امدادی سامان کی فراہمی، خوراک، روزگار کے مواقع، غذائیت اور مہاجرین کی طبی نگہداشت، واپس آنے والے بے گھر افراد اور قدرتی آفات، خشک سالی اور جنگ کے نتیجے میں بے گھر ہونے والوں کی مدد شامل ہے۔ امریکہ دوسرے عطیہ دہندگان سے کہتا ہے کہ بڑھتی ہوئی انسانی ضروریات پوری کرنے کے لیے وہ بھی اپنا حصہ ڈالیں۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں