rss

وزیر خارجہ مائیکل آر پومپئو کی صحافیوں سے گفتگو

Русский Русский, English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
26 مارچ 2019
وزیر خارجہ مائیکل آر پومپئو کی صحافیوں سے گفتگو
پریس بریفنگ روم
واشنگٹن ڈی سی

وزیر پومپئو: سبھی کو صبح بخیر۔ آج میں دو اعلان کر رہا ہوں جن کا تعلق دفتر خارجہ کی جانب سے یہ امر یقینی بنانے کے لیے جاری کوششوں سے ہے کہ امریکی ٹیکس دہندگان کے ڈالر اسقاط حمل میں سہولت دینے یا اس کے فروغ میں استعمال نہ ہوں۔

پہلے اعلان کا تعلق اس حکمت عملی سے ہے جسے ”میکسیکو سٹی پالیسی” بھی کہا جاتا ہے۔

ریگن دور میں جاری کیا گیا یہ حکم نامہ اس بات کو یقینی بناتا ہے کہ ٹیکس دہندگان کے ڈالر بیرون ملک ایسی غیرسرکاری تنظیموں کی مدد کے لیے استعمال نہ ہوں جو اسقاط حمل کو خاندانی منصوبہ بندی کے طریقے کے طور پر کام میں لاتی یا عملاً اس کی حمایت کرتی ہیں۔

صدر ٹرمپ نے 2017 میں میکسیکو سٹی پالیسی کو دلیرانہ طور سے وسعت دی تھی۔ اب یہ ہماری جانب سے صحت عامہ کے عالمگیر سالانہ پروگراموں کے لیے بیرون ملک دی جانے والی قریباً 9 ارب ڈالر امداد کے ساتھ جُڑی ہر انسانی زندگی کا تحفظ کرتی ہے اور نتیجتاً دنیا بھر میں پہلے سے کہیں بڑی تعداد میں نا زائیدہ بچوں کو بچاتی ہے۔ یہ ایک معقول اور اچھی چیز ہے۔ مجھے ایسی انتظامیہ میں خدمات انجام دینے پر فخر ہے جو ہم میں سب سے چھوٹوں کا بھی تحفظ کرتی ہے۔

ہماری انتظامیہ کو دو سال ہونے کے بعد اب ہمارے عملدرآمدی شراکت داروں کی بڑی اکثریت اس پالیسی کو بجا لانے پر رضامند ہے اور وہ ہمارے ساتھ کام جاری رکھے ہوئے ہیں۔ موجودہ انتظامیہ نے ثابت کیا ہے کہ ہم عالمگیر صحت کے حوالے سے اپنے اہم اہداف کی تکمیل کا عمل جاری رکھ سکتے ہیں جن میں نا زائیدہ بچوں کی ہلاکت میں سہولت دینے سے انکار کرتے ہوئے خواتین کو طبی نگہداشت کی فراہمی بھی شامل ہے۔

وزیر خارجہ کی حیثیت سے میں نے اپنی ٹیم کو حکم جاری کیا ہے کہ اس پالیسی پر زیادہ سے زیادہ ممکنہ حد تک عملدرآمد کے لیے تمام مناسب اقدامات اٹھائے جائیں۔ آج میں انہیں تحفظ دینے کی کوششیں بہتر بنانے کے لیے مزید وضاحتوں کا اعلان کر رہا ہوں جو ہم میں سب سے چھوٹے ہیں۔

ماضی کی طرح اب بھی ہم بیرون ملک ایسی غیرسرکاری تنظیموں کو امداد کی فراہمی سے انکار جاری رکھیں گے جو اسقاط حمل کو خاندانی منصوبہ بندی کے طریقے کے طور پر کام میں لاتی یا عملاً اس کی حمایت کرتی ہیں۔

میرے آج کے فیصلے کے نتیجے میں اب ہم یہ بھی واضح کر رہے ہیں کہ ہم بیرون ملک ایسی غیرسرکاری تنظیموں کو مدد فراہم نہیں کریں گے جو اسقاط حمل کی عالمگیر صنعت میں سرگرم دیگر غیرملکی گروہوں کو مالی معاونت دیتی ہیں۔

ہم مالی معاونت کے پس پردہ منصوبوں اور اس پالیسی سے گریز کے ہتھکنڈوں پر کڑی ممانعت کا نفاذ کریں گے۔ امریکی ٹیکس دہندگان کے ڈالر اسقاط حمل میں مدد کے لیے استعمال نہیں ہوں گے۔

یہاں میں اپنا دوسرا اعلان کرتا ہوں۔ ہم امریکی مالی وسائل بشمول بیرون ملک دی جانے والی امداد کو اسقاط حمل کے لیے یا اس کے خلاف ترغیب دینے کی ممانعت پر مبنی وفاقی قانون کو بھی پوری طرح نافذ کر رہے ہیں جسے سلجنڈر ترمیم بھی کہا جاتا ہے۔

میں نے امریکی ممالک کی تنظیم کے ایک ذیلی ادارے کی جانب سے اسقاط حمل کی حمایت بارے حالیہ شہادت کی روشنی میں اپنی ٹیم کو حکم دیا ہے کہ وہ ‘او اے ایس’ کے ساتھ بیرون ملک امداد کے معاہدوں میں ایک شرط رکھے جس کی رو سے اسقاط حمل کے حق میں یا اس کے خلاف ترغیب کے لیے مالی وسائل کے استعمال کی واضح ممانعت ہو۔

او اے ایس کے اداروں کو اسقاط حمل کے حق میں کام کرنے کے بجائے کیوبا، نکاراگوا اور وینزویلا میں جاری بحرانوں پر توجہ مرکوز کرنی چاہیے۔

اپنے پیغام کو پُرزور اور واضح بنانے کے لیے ہم او اے ایس کے لیے اپنی مالی معاونت محدود کر دیں گے۔ یہ کمی اسقاط حمل سے متعلق سرگرمیوں پر او اے ایس کے ممکنہ اخراجات میں شامل امریکہ کے تخمینہ شدہ حصے کے برابر ہے۔

امریکی عوام کو یقین ہونا چاہیے کہ موجودہ انتظامیہ اور موجودہ دفتر خارجہ اور یو ایس ایڈ امریکی ٹیکس دہندگان کے ڈالروں کے تحفظ اور دنیا بھر کے لوگوں کی زندگی کے تقدس کی حفاظت اور احترام کے لیے ہرممکن کوشش کریں گے۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں