rss

پاسداران انقلاب اسلامی کو غیرملکی دہشت گرد نامزد کیے جانے پر صدر کا بیان

Português Português, English English, العربية العربية, Français Français, Русский Русский, Español Español, हिन्दी हिन्दी

وائٹ ہاؤس
دفتر برائے سیکرٹری اطلاعات
برائے فوری اجرا
8 اپریل 2019
پاسداران انقلاب اسلامی کو غیرملکی دہشت گرد نامزد کیے جانے پر صدر کا بیان

 
 

آج میں ایران کے پاسداران انقلاب اسلامی (آئی آر جی سی) بشمول اس کی قدس فورس کو ‘مہاجرت و قومیت کے قانون’ کے سیکشن 219 کے تحت غیرملکی دہشت گرد تنظیم (ایف ٹی او) نامزد کرنے کے لیے اپنی انتظامیہ کے منصوبے کا رسمی اعلان کر رہا ہوں۔ دفتر خارجہ کے زیرقیادت اس بے مثل اقدام سے یہ حقیقت واضح ہوتی ہے کہ ایران ناصرف ریاستی سطح پر دہشت گردی کا معاون ہے بلکہ پاسداران انقلاب ریاست کاری کے ذریعے کے طور پر دہشت گردی سے کام لینے، اس کی مالی معاونت اور اسے فروغ دینے میں ملوث ہے۔ پاسداران انقلاب دہشت گردی کی عالمگیر مہم کی رہنمائی اور اس پر عملدرآمد کے لیے ایرانی حکومت کا بنیادی ذریعہ ہے۔

یہ پہلا موقع ہے جب امریکہ نے کسی دوسری حکومت کے ایک حصے کو دہشت گرد نامزد کیا ہے۔ اس سے یہ حقیقت واضح ہوتی ہے کہ ایران کے اقدامات دوسری حکومتوں سے بنیادی طور پر مختلف ہیں۔ یہ کارروائی ایرانی حکومت پر زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی ہماری مہم کی وسعت اور حجم میں نمایاں اضافہ کرے گی۔ اس اقدام سے پاسداران انقلاب کے ساتھ کام کرنے یا اسے مدد فراہم کرنے کے نتیجے میں لاحق خطرات بالکل واضح ہو جاتے ہیں۔ اگر آپ پاسداران انقلاب کے ساتھ کام کر رہے ہیں تو پھر آپ دہشت گردی کی مالی معاونت میں ملوث سمجھے جائیں گے۔

اس اقدام سے تہران کو واضح پیغام جاتا ہے کہ اس کی جانب سے دہشت گردی کی معاونت کے سنگین نتائج ہوں گے۔ ہم ایرانی حکومت پر مالیاتی دباؤ بڑھانے کا سلسلہ جاری رکھیں گے اور اس کے لیے دہشت گرد سرگرمی کی معاونت مشکل بنا دیں گے یہاں تک کہ وہ اپنا ضرررساں اور لاقانونی طرزعمل ترک نہ کر دے۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں