rss

ایرانی تیل کی درآمدات پر فیصلہ

English English, العربية العربية, Français Français, Português Português, Русский Русский, Español Español, हिन्दी हिन्दी


امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
وزیر خارجہ مائیک پومپئو کا بیان
22 اپریل 2019


آج ہم اعلان کر رہے ہیں کہ امریکہ ایرانی تیل کے موجودہ درآمد کنندگان کو کوئی اضافی اہم تخفیفی استثنیات جاری نہیں کرے گا۔ ٹرمپ انتظامیہ ایرانی تیل کی برآمدات کو اب تک کی کم ترین سطح پر لے آئی ہے اور ہم ایران پر دباؤ ڈالنے کی مہم میں ایسے نپے تلے انداز میں تمثیلی تیزی لا رہے ہیں جس سے ہمارے قومی سلامتی کے مقاصد کی تکمیل کے ساتھ عالمی منڈیوں میں تیل کی ترسیل بھی پوری طرح برقرار ہے۔ ہم ایرانی خام تیل سے دوسرے متبادل کی جانب منتقل ہونے والے اپنے اتحادیوں اور شراکت داروں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ اس منتقلی کو آسان اور خاطرخواہ مقدار میں تیل کی ترسیل یقینی بنانے کے لیے سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اور تیل پیدا کرنے والے دیگر بڑے ممالک کے ساتھ ہماری جامع اور مفید بات چیت ہوئی ہے۔ امریکی تیل کی پیداوار میں اضافے کے علاوہ یہ اقدام ہمارے اس اعتماد کو واضح کرتا ہے کہ توانائی کی منڈیوں میں ترسیل پوری طرح جاری رہے گی۔

آج کا اعلان ایران پر دباؤ ڈالنے کی مہم میں پہلے سے حاصل شدہ اہم کامیابیوں کو مزید آگے بڑھائے گا۔ ہم ایرانی حکومت پر زیادہ سے زیادہ دباؤ جاری رکھیں گے یہاں تک کہ اس کے رہنما اپنا تباہ کن طرزعمل تبدیل کر لیں، ایرانی عوام کے حقوق کا احترام کریں اور مذاکرات کی میز پر واپس آ جائیں۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں