rss

ایران پر زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی امریکی مہم میں پیش قدمی

English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
22 اپریل 2019
دفتر خارجہ کا حقائق نامہ


امریکہ ایرانی تیل کے موجودہ درآمد کنندگان کو کوئی اہم تخفیفی استثنیات نہیں دے رہا۔ زیادہ سے زیادہ دباؤ کا مطلب زیادہ سے زیادہ دباؤ ہے۔

  • وزیر پومپئو نے ایرانی تیل کے موجودہ درآمد کنندگان کو کوئی اہم تخفیفی استثنیات نہ دینے کے اپنے فیصلے کا اعلان کیا۔
  • جیسا کہ وزیر نے کہا، زیادہ سے زیادہ دباؤ کا مطلب زیادہ سے زیادہ دباؤ ہے۔ ہم ایرانی تیل کی برآمدات صفر پر لانے اور ایرانی حکومت کو دہشت گردی و بیرون ملک پرتشدد جنگوں کی مالی معاونت کے لیے درکار آمدنی کے حصول سے روکنے کا اپنا وعدہ پورا کر رہے ہیں۔
  • ایرانی تیل کی برآمدات کو ہدف بنانا اہم ہے کیونکہ وہ ہمیشہ سے اس حکومت کی آمدنی کا واحد سب سے بڑا ذریعہ رہی ہیں۔ ایران اس آمدنی کو اپنے دہشت گرد آلہ کاروں کی معاونت، میزائل پروگرام کو ترقی دینے اور دیگر تخریبی طرزہائے عمل کے لیے استعمال کرتا ہے۔
  • ایران کے ساتھ کسی بھی ایسی سرگرمی میں شام اداروں کو سنگین نتائج کا سامنا ہو سکتا ہے جو پابندی کی ذیل میں آتی ہو۔ ان نتائج میں امریکی مالیاتی نظام تک رسائی اور امریکہ یا امریکی کمپنیوں کے ساتھ کاروبار کی اہلیت کھونا بھی شامل ہو سکتا ہے۔
  • امریکہ ایرانی حکومت پر زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنا جاری رکھے گا یہاں تک کہ اس کے رہنما اپنا تباہ کن طرز عمل تبدیل کر لیں، اپنے عوام کے حقوق کا احترام کریں اور مذاکرات کی میز پر واپس آ جائیں۔

ٹرمپ انتظامیہ نے ایرانی حکومت پر اب تک کی کڑی ترین پابندیاں نافذ کی ہیں۔ ہمارا دباؤ کام دکھا رہا ہے۔

  • آج کا اعلان ہماری پہلے سے حاصل شدہ کامیابیوں کو مزید آگے بڑھائے گا۔
  • ہمارے دباؤ کے سبب ایرانی تیل کی برآمدات میں کمی آ چکی ہے۔ مئی 2918 میں صدر ٹرمپ کی جانب سے جوہری معاہدے میں امریکی شرکت ختم کرنے کے اعلان سے اب تک 1.5 ملین بیرل سے زیادہ ایرانی تیل منڈی سے ہٹ چکا ہے۔ نتیجتاً ایرانی حکومت کی اربوں ڈالر آمدنی میں کمی آ گئی ہے۔
  • مجموعی طور پر ہمارا اندازہ ہے کہ مئی سے اب تک ہماری پابندیوں کے سبب ایرانی حکومت تیل کی 10 ارب ڈالر سے زیادہ آمدنی تک براہ راست رسائی سے محروم ہو چکی ہے۔ یہ روزانہ کی بنیاد پر کم از کم 30 ملین ڈالر کا نقصان ہے اور یہ صرف تیل سے متعلق ہے۔
  • مارچ میں حزب اللہ کے رہنما حسن نصراللہ نے پہلی مرتبہ عطیات کے لیے کھلے عام اپیل کی۔ وہ کفایت شعاری کے ایسے اقدامات پر مجبور ہو گئے ہیں جس کی پہلے مثال نہیں ملتی کیونکہ ایران سے پہلے کی طرح رقم نہیں آ رہی اور یہ ہمارے بے مثل دباؤ کی بدولت ہی ممکن ہوا۔
  • شام اور دیگر جگہوں پر ایرانی آلہ کاروں کو تہران کی جانب سے مالی معاونت میں کمی کا سامنا ہے۔ جنگجوؤں کو تنخواہیں نہیں مل رہیں اور جن خدمات پر ان کا کبھی انحصار تھا وہ ختم ہو رہی ہیں۔

تیل کی منڈیوں میں بھرپور ترسیل جاری ہے

  • تیل کی منڈیوں میں ترسیل پوری طرح جاری ہے اور سٹاک میں موجود تیل کے ذخائر وقت کے حساب سے خاطرخواہ مقدار میں موجود ہیں۔
  • سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سمیت تیل پیدا کرنے والے ممالک  نے ایرانی تیل کی برآمدات بند ہونے کے نتیجے میں پیدا شدہ کمی کو پورا کرنے کے لیے پیداوار میں اضافے کے وعدے کیے ہیں۔
  • غیر اوپیک (تیل برآمد کرنے والے ممالک کی تنظیم) ممالک کی جانب سے تیل کی بڑھتی ہوئی پیداوار اور ذخیرہ شدہ تیل کی خاطرخواہ مقدار سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ ایرانی تیل کی برآمدات میں کمی سے پیدا ہونے والا خلا کامیابی سے پُر کر لیا گیا ہے۔
  • امریکہ اور تیل پیدا کرنے والے دیگر غیر اوپیک ممالک نے پہلے ہی پیداوار میں اضافہ کر کے ایرانی برآمدات کی جگہ لے لی ہے جبکہ دیگر بڑے پیداکاروں نے منڈیوں کو اپنی آمادگی اور ایرانی تیل کی برآمدات میں مزید کمی کا ازالہ کرنے کے لیے اپنی پیداوار میں اضافے کی اہلیت کا اشارہ دیا ہے۔
  • امریکی محکمہ توانائی میں توانائی سے متعلق معلوماتی انتظامیہ کے مطابق امریکی قیادت میں غیر اوپیک ممالک کی تیل پیداوار میں  2019 اور 2020 کے دوران  2.2 ملین بیرل روزانہ اضافے کی امید ہے۔
  • توانائی کے عالمی ادارے (آئی ای اے) کے مطابق او ای سی ڈی (تنظیم برائے معاشی تعاون و ترقی) بشمول امریکی صنعت کے پاس موجود تیل کے ذخیرے پانچ سالہ اوسط سے زیادہ ہیں۔

امریکہ تیل کی پیداوار اور برآمدات میں اضافہ کر رہا ہے۔

  • ای آئی اے کے مطابق 2019 کی پہلی سہ ماہی میں امریکہ کی تیل اور دیگر مائعاتی ایندھن کی پیداواری اوسط 17 ملین بیرل روزانہ سے زیادہ رہی۔ اس طرح امریکہ تیل اور قدرتی گیس سے متعلق مائعات پیدا کرنے والا سب سے بڑا ملک ہے جو مجموعی عالمگیر پیداوار کا 19 فیصد سے زیادہ پیدا کر رہا ہے۔
  • اندازے کے مطابق امریکی خام تیل کی پیداوار مارچ میں 12 ملین بیرل روزانہ تک پہنچی جو کہ ایک سال پہلے کے مقابلے میں روزانہ 1.6 ملین بیرل زیادہ ہے۔
  • ای آئی اے کا اندازہ ہے کہ آئندہ سال میں امریکی خام تیل کی پیداوار 1.4 ملین بیرل روزانہ تک بڑھ جائے گی۔
  • ای آئی اے کے مطابق جنوری 2019 میں امریکی خام تیل کی پیداوار 2.575 ملین بیرل تک پہنچی جو کہ گزشتہ برس کے مقابلے میں روزانہ 1.2 ملین بیرل سے زیادہ ہے۔ اسے گزشتہ سال  کے مقابلے میں 90 فیصد زیادہ بھی کہا جا سکتا ہے۔ امریکی برآمدات سے منڈی کو موثر طور سے چلنے مدد ملی ہے۔
  • آئی ای اے کا اندازہ ہے کہ 2021 کے دوران امریکی برآمدات میں تیزی سے اضافہ ہو گا اور امریکہ روزانہ 9 ملین بیرل پیداوار کے ساتھ تیل اور پٹرولیم مصنوعات پیدا کرنے والا دنیا کا دوسرا سب سے بڑا ملک بنا جائے گا۔ یہ پیداوار روس سے زیادہ اور سعودی عرب سے قریباً برابر ہو گی۔
  • امریکہ تیل پیدا کرنے والے بڑے ممالک کے ساتھ قریبی اور مفید مشاورت میں مصروف ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ توانائی کے عالمی ادارے جیسی تیل سے متعلق بڑی تنظیم سے بات چیت بھی جاری ہے جس سے عالمی منڈی میں تیل کی خاطرخواہ مقدار یقینی بنانے میں مدد ملے گی۔

امریکہ تیل کی پیداوار میں تیزی سے اضافہ کر رہا ہے ۔ 2017 سے 2020 تک امریکی خام تیل کی پیداوار میں قریباً 4 ملین بیرل تک اضافہ


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں