rss

وزیر خارجہ مائیکل آر پومپئو کی صحافیوں سے گفتگو

Español Español, English English, العربية العربية, Français Français, Português Português, Русский Русский, हिन्दी हिन्दी

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
برائے فوری اجرا
23 جون 2019


 

وزیر پومپئو: سبھی کو سہ پہر بخیر۔ اس طویل دورے پر جاتے ہوئے مجھے چند باتیں کرنا ہیں۔ پہلی بات یہ کہ میں سمجھتا ہوں سبھی کو یہ علم ہونا واقعی اہم ہے کہ ایرانی بہت سے معاملات میں غلط اطلاعات پھیلا رہے ہیں۔ آپ وزیر خارجہ ظریف کی جانب سے سامنے آنے والا بچگانہ نقشہ دیکھ چکے ہیں۔ امریکی فوج اور ہمارے انٹیلی جنس اداروں کے اعلیٰ معیار اور پیشہ وارانہ اہلیت کے ہوتے ہوئے کسی کے ذہن میں یہ شبہ نہیں ہونا چاہیے کہ ہمارا بغیر پائلٹ طیارہ کہاں پرواز کر رہا تھا۔ یہ عالمی فضائی حدود میں تھا اور ہمیں ایرانیوں کو کسی لمحے یہ موقع نہیں دینا جہاں کوئی رپورٹر لکھے کہ امریکیوں کی جانب سے پیش کردہ معلومات پر کوئی قابل اعتبار ردعمل بھی سامنے آیا۔

دوسری بات یہ کہ ایرانی اومانی ذرائع سے بھیجے گئے کسی پیغام سے متعلق کہانی سنا رہے ہیں۔ یہ محض جھوٹ ہے۔ یہ صاف اور کھلا جھوٹ ہے۔ انہوں نے ایک اور پیغام دیا ہے کہ امریکہ بلاد ہوائی اڈے سے اپنی فورسز ہٹا رہا ہے۔ آپ انہیں دیکھ سکتے ہیں۔ یہ فورسز وہیں موجود ہیں۔

میں نے ان تمام باتوں کا تذکرہ اس لیے کیا کہ گزرتے دنوں کے ساتھ اور ایرانی حکومت کے افعال کی نوعیت تبدیل کرنے کے لیے ہماری سفارتی کوششوں کی موجودگی میں اس بات کا قوی امکان ہے کہ ایران تصوراتی، فریب آمیز اور جھوٹی اطلاعات پیش کرتا رہے گا۔ ہمیں یہ امر یقینی بنانا ہے کہ میڈیا کا ہر ادارہ اور اس صورتحال کا مشاہدہ کرنے والا ہر فرد یہ بات سمجھے لے کہ سچ کیا ہے اور ایرانی حکومت آپ کو کیا دکھانا چاہتی ہے۔ یہ بات واقعی اہم ہے۔

میں آج دورے پر جا رہا ہوں۔ ہمارا پہلا قیام سعودی عرب اور متحدہ امارات میں ہو گا۔ ایران کی جانب سے درپیش مسئلے میں یہ دونوں ممالک ہمارے بہت بڑے اتحادی ہیں۔ ہم ان کے ساتھ یہ بات کریں گے کہ یہ کیسے یقینی بنایا جا سکتا ہے کہ ہم سب ایک عالمگیر اتحاد کے لیے تزویراتی طور پر اکٹھے ہوں۔ اس اتحاد میں ناصرف خلیجی ریاستیں بلکہ ایشیا اور یورپ کے ممالک بھی شامل ہوں گے جنہیں اس مسئلے کا اندازہ ہے اور جو دنیا میں دہشت گردی کے سب سے بڑے ریاستی معاون کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہوں۔

آپ یہ بھی دیکھیں گے کہ صدر ٹرمپ کے عہدہ سنبھالتے وقت شروع کردہ ہماری مہم جاری رہے گی۔ سوموار کو ایران کے خلاف اہم نئی پابندیاں عائد کی جائیں گی اور دنیا کو علم ہونا چاہیے کہ ہم یہ امر یقینی بناتے رہیں گے کہ ایران کو دہشت پھیلانے، جوہری ہتھیاروں کا نظام تیار کرنے اور میزائل پروگرام  کے لیے درکار وسائل سے محروم رکھنے کے لیے یہ کوشش جاری رہے گی اور ہم انہیں اس مقصد کے لیے درکار وسائل سے دور رکھنے کے لیے کام کرتے رہیں گے تاکہ دنیا بھر میں امریکہ کے مفادات اور امریکی عوام محفوظ رہیں۔

جاتے ہوئے مجھے دو مزید باتیں بھی کہنا ہیں۔ ایک یہ کہ جب میں یہاں سے روانہ ہو رہا ہوں تو اسی وقت بہت سے لوگ بحرین جا رہے ہیں جہاں امریکی انتظامیہ مشرق وسطیٰ امن منصوبے کا اقتصادی جزو سامنے لائے گی۔ اسے کل جاری کیا گیا ہے۔ مجھے امید ہے کہ سبھی اس کا بغور جائزہ لیں گے۔ اس میں دنیا بھر میں ہر جگہ موجود فلسطینی عوام کے لیے روشن مستقبل پیش کیا گیا ہے۔

گزشتہ شب صدر ٹرمپ کی جانب سے چیئرمین کم کو بھیجے گئے ایک خط کے بارے میں اطلاعات سامنے آئی تھیں۔ میں تصدیق کر سکتا ہوں کہ واقعتاً یہ خط بھیجا گیا تھا۔ مجھے امید ہے کہ اس سے ہمیں جزیرہ نما کوریا کو جوہری اسلحے سے پاک کرنے کے لیے شمالی کوریا والوں کے ساتھ اہم بات چیت جاری رکھنے کی اچھی بنیاد میسر آئے گی۔ اس کے ساتھ ہی میں چند سوالات لینا چاہوں گا۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں