rss

کوویڈ۔19 وبا کے خلاف امریکہ کی بیرون ملک امداد

English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский, Español Español, 中文 (中国) 中文 (中国)

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
وزیر خارجہ مائیکل آر پومپیو کا بیان
26 مارچ 2020

 

امریکی حکومت نے اندرون و بیرون ملک کوویڈ۔19 وبا کا مقابلہ کرنے کے لیے بے مثل وسائل کا فوری اہتمام کیا ہے۔ آج مجھے یہ اعلان کرتے ہوئے خوشی ہے کہ امریکہ نے صحت و انسانی ضروریات کے حوالے سے ہنگامی مدد کے لیے قریباً 274 ملین ڈالر مہیا کیے ہیں۔ امریکی عوام نجی شعبے کے ساتھ مل کر اس وبا کا مقابلہ کرنے میں قائدانہ کردار ادا کر رہے ہیں۔

آج اعلان کردہ 274 ملین ڈالر سے دنیا میں انتہائی خطرے کا شکار 64 ممالک کو وسائل مہیا کیے جائیں گے تاکہ وہ اس وبا سے بہتر طور پر نبردآزما ہو سکیں اور اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین کو دنیا میں چند انتہائی کمزور آبادیوں کی مدد میں معاونت دی  جائے گی۔ امداد کے ان نئے وعدوں میں ہنگامی طبی امداد کی مد میں قریباً 100 ملین ڈالر بھی شامل ہیں۔ اس میں اب دنیا بھر میں آفات کے خلاف مدد کے لیے رکھے گئے 110 ملین ڈالر بھی شامل ہو گئے ہیں۔ اس طرح صحت کے شعبے میں ہماری ہنگامی امداد کے ساتھ یہ رقم انتہائی خطرے کی زد میں آنے والے 64 ممالک کو مہیا کی جائے گی۔ اہم بات یہ ہے کہ ہماری امداد میں اقوام  متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین (یو این ایچ سی آر) کے لیے 64 ملین ڈالر بھی شامل ہیں جس سے انہیں دنیا کی چند انتہائی غیرمحفوظ آبادیوں میں وبا کا مقابلہ کرنے کی کوششوں میں مدد ملے گی۔

آج اعلان کردہ نئی امداد عالمگیر صحت اور انسانی امداد کے شعبے میں امریکہ کی قیادت کا تسلسل  ہے۔ 2009 سے اب تک امریکی ٹیکس دہندگان نے صحت کے شعبے میں مدد کے لیے فیاضانہ طور سے  100 ارب ڈالر سے زیادہ رقم دی  اور دنیا بھر میں انسانی امداد کے لیے 70 ارب ڈالر سے زیادہ مالی وسائل فراہم کیے۔ ہمارا ملک طویل مدتی ترقی اور اپنے شراکت داروں کے ساتھ صلاحیت میں اضافے اور وقتاً فوقتاً آنے والے بحرانوں میں ہنگامی مدد    کی کوششوں کے حوالے سے صحت و امداد کے شعبوں میں واحد سب سے بڑا عطیہ دہندہ ہے۔

امریکہ کوویڈ۔19 وبا کا مقابلہ کرنے کے لیے کارروائی جاری رکھے گا۔ یہ مالی مددابتدائی نوعیت کی ہے جس کا تعلق اس جاری امداد سے ہے جو ہم عالمی ادارہ صحت اور یونیسف جیسے کثیر ملکی اداروں کو پہلے ہی مہیا کر رہے ہیں۔ آج اعلان کردہ اس امداد کے علاوہ 6 مارچ کو صدر ٹرمپ نے کرونا وائرس کے خلاف تیاری اور اس کا مقابلہ کرنے کے لیے اضافی مدبندی کے قانون پر دستخط کیے تھے جس میں دنیا بھر کے ممالک کو اس وبا کے مقابلے میں مدد دینے کے لیے 1.3ارب ڈالر کی اضافی مدد بھی شامل ہے۔

امریکی کاروباروں ، غیرسرکاری اداروں ، خیراتی تنظیموں اور عملدرآمدی شراکت داروں کی جانب سے جاری غیرمعمولی کام کے ذریعے عطیات اور امداد کی مد میں 1.5 ارب ڈالر کی فراہمی سے ہم بحیثیت قوم حقیقی طور سے اس مہلک وائرس کا مقابلہ کرنے کے لیے متحرک ہو رہے ہیں۔ ہم اس حوالے سے جاری عالمگیر کوششوں کو مزید تیز کرنے کے لیے دوسرے عطیہ دہندگان کی جانب سے غیرمشروط حصہ ڈالنے کا خیرمقدم کرتے ہیں۔

کوویڈ۔19 کے خلاف ردعمل میں ہماری قیادت اس امر کی ایک اور مثال ہے کہ کیسے امریکہ ، اس کی حکومت، کاروبار، ادارے اور لوگ بدستور دنیا میں امداد کی فراہمی کے حوالے سے سرفہرست ہیں۔ موجودہ وسائل، اضافی امداد، نجی شعبے اور امریکی عوام کے فیاضانہ جذبے کے درمیان امریکہ اس خطرناک وبا اور عالمگیر صحت و سلامتی کو اس سے لاحق خطرے کا مقابلہ کرنے میں قائدانہ کردار ادا کر رہا ہے اور کرتا رہے گا۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں