rss

کوویڈ۔19 کے خلاف امدادی سرگرمیوں اور تحفظ صحت کے لیے مالی معاونت میں امریکہ کا قائدانہ کردار

English English, العربية العربية, Français Français, हिन्दी हिन्दी, Português Português, Русский Русский, Español Español

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
حقائق نامہ
27 مارچ 2020

 

امریکہ کی حکومت کوویڈ۔19 کی وبا کے خلاف دنیا بھر میں امدادی کاموں اور صحت کے میدان میں اٹھائے جانے والے اقدامات میں قائدانہ کردار ادا کر رہی ہے۔ ہم اندرون و بیرون ملک اس بیماری کے خلاف فوری اقدامات کے لیے تمام ضرور وسائل ترتیب دے رہے ہیں۔ اس بحران کے خلاف جامع اور فیاضانہ امریکی ردعمل میں دفتر خارجہ اور یوایس ایڈ صحت اور امدادی کاموں کے لیے ابتدائی طور پر قریباً 274 ملین ڈالر مہیا کر رہے ہیں جس سے ضرورت مند ممالک کی مدد ہو گی۔ یہ رقم اُس مالی معاونت میں نیا اضافہ ہے جو ہم عالمی ادارہ صحت اور یونیسف جیسے کثیرملکی اداروں کو پہلے ہی فراہم کر رہے ہیں۔

اب تک اس مجموعی مالی معاونت میں یوایس ایڈ کے صحت سے متعلق عالمگیر ہنگامی ریزرو فنڈ  سے دی جانے والی 100 ملین ڈالر کی امداد اور یوایس ایڈ کے آفات میں مدد کے عالمگیر اکاؤنٹ سے 110 ملین ڈالر انسانی امداد بھی شامل ہے جو ایسے 64 ممالک کو مہیا کی جائے گی جنہیں اس عالمگیر وبا میں سب سے زیادہ خطرہ لاحق ہے۔ دفتر خارجہ کے شعبہ آبادی، مہاجرین و مہاجرت کے ذریعے اقوام متحدہ کا ادارہ برائے مہاجرین (یواین ایچ سی آر)  کو انسانی امداد کے لیے 64 ملین ڈالر فراہم کیے جائیں گے جس سے ایسے علاقوں میں انتہائی غیرمحفوظ لوگوں کو کوویڈ۔19 سے لاحق خطرات کے خلاف تحفظ دیا جائے گا جو پہلے ہی انسانی بحران کا شکار ہیں۔

امریکی حکومت کے ادارے باہم مل کر ارتبابط  اورامداد کے  اثرات کے امکان کی بنیاد پر بیرون ملک مالی معاونت کے حوالے سے ترجیحات متعین کر رہے ہیں۔ آج دی جانے والی نئی امداد کے ساتھ امریکہ دنیا بھر کے ممالک کو  درج ذیل مخصوص معاونت مہیا کر رہا ہے۔

افریقہ:

انگولا: صحت کے شعبے میں 570000 ڈالر کی امداد سے انگولا کے اہم طبی مراکز کو مواصلات، پانی، نکاسی آب اور وبا سے بچاؤ اور روک تھام کے لیے مدد فراہم کی جائے گی۔ یہ مدد انگولا کے لیے طویل مدتی امریکی مالی معاونت میں نیا اضافہ ہے جس کے تحت گزشتہ 20 برس میں اسے طبی معاونت کے لیے 613 ملین اور ملک کو مجموعی امداد کے طور پر 1.48 بلین ڈالر دیے جا چکے ہیں۔

برکینا فاسو: مواصلات، پانی، نکاسی آب کی سرگرمیوں، وبا سے بچاؤ اور روک تھام، صحت عامہ کے حوالے سے پیغام رسانی اور مزید اقدامات کے لیے قریباً 2.1 ملین ڈالر امداد دی جائے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے برکینا فاسو میں صرف صحت کے شعبے میں 222 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 2.4 بلین ڈالر امداد دی ہے۔

کیمرون: صحت کے شعبے میں 1.4 ملین ڈالر کی معاونت سے اہم طبی مراکز میں بیماریوں پر قابو پانے، لیبارٹریوں اور نگرانی کے نظام کو بہتر بنانے، مقامی سطح پر لوگوں کو بیماری سے مقابلے کے لیے تیار کرنے اور مقامی سطح پر بیماری کے حوالے سے پیغام رسانی بہتر بنانے کے لیے مدد دی جائے گی۔ یہ امداد گزشتہ 20 برس میں کیمرون کے لیے طبی معاونت کے ضمن میں فراہم کیے گئے 390 ملین ڈالر اور مجموعی امداد کے 960 ملین ڈالر میں نیا اضافہ ہے۔

آئیوری کوسٹ: صحت کے شعبے میں 1.6 ملین ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام قائم کرنے، بیماری میں مبتلا مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف اقدامات اور تیاری کے لیے  تکنیکی ماہرین کی مدد، اطلاعات کی فراہمی، بیماری سے بچاؤ اور روک تھام نیز ایسے مزید اقدامات میں مدد دی جائے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ نے آئیوری کوسٹ میں صحت کےشعبے میں 1.2 بلین ڈالر دیے ہیں جبکہ ملک میں طویل مدتی ترقی اور دیگر معاونت کے لیے دی جانے والی مجموعی رقم 2.1 بلین ڈالر ہے۔

ایتھوپیا: کوویڈ۔19 کا مقابلہ کرنے کے لیے دیے جانے والے 1.85 ملین ڈالر سے بیماری کے حوالے سے معلومات کی فراہمی، پانی ونکاسی آب، بیماری سے بچاؤ اور رابطے میں مدد ملے گی۔ یہ امداد ایتھوپیا کے لیے گزشتہ 20 برس میں فراہم کی جانے والی مالی معاونت میں نیا اضافہ ہے۔ اس دوران امریکہ نے صرف صحت کے شعبے میں 4 بلین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 13 بلین ڈالر سے زیادہ معاونت فراہم کی ہے۔

کینیا: صحت کے شعبے میں ایک ملین ڈالر کی معاونت سے بیماری کے بارے میں معلومات کی فراہمی، بیماری کا ممکنہ کیس سامنے آنے کی صورت میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام قائم کرنے اور ذرائع ابلاغ، طبی عملے اور مقامی سطح پر لوگوں میں صحت عامہ کے حوالے سے پیغام رسانی میں مدد دی جائے گی۔ کوویڈ۔19 کے حوالے سے یہ مخصوص امداد کینیا کے لیے گزشتہ 20 برس میں فراہم کردہ امریکی مالی معاونت میں نیا اضافہ ہے۔ اس دوران امریکہ نے صحت کے شعبے میں بہتری کے لیے 6.7 بلین ڈالر جبکہ ترقیاتی مد میں 11.7 بلین ڈالر سے زیادہ امداد دی ہے۔

موزمبیق: صحت کے شعبے میں 2.8 ملین کی ہنگامی مالی معاونت سے ملک کے اہم طبی مراکز میں بیماری کے بارے میں معلومات کی فراہمی، پانی و نکاسی آب، بیماری سے بچاؤ اور روک تھام میں مدد ملے گی۔ امریکہ نے گزشتہ 20 برس میں موزمبیق کو صحت کے شعبے میں 3.8 بلین ڈالر جبکہ مجموعی ترقیاتی امداد کے طور پر قریباً 6 بلین ڈالر مہیا کیے ہیں۔

نائجیریا: صحت کے شعبے اور امدادی کاموں کے لیے دی جانے والی 7 ملین ڈالر سے زیادہ مالی معاونت کے ذریعے بیماری کے بارے میں معلومات کی فراہمی، پانی و نکاسی آب کی سرگرمیوں، بیماری سے بچاؤ، روک تھام اور اس حوالے سے رابطے میں مدد ملے گی۔ اس سے پہلے گزشتہ 20 برس میں امریکہ نائجیریا کو صحت کے شعبے میں 5.2 بلین ڈالر سے زیادہ رقم مہیا کر چکا ہے جبکہ اس کے لیے مجموعی امدادی رقم کا حجم 8.1 بلین ڈالر سے زیادہ ہے۔

روانڈا: صحت کے شعبے میں ایک ملین ڈالر کی امداد سے کوویڈ۔19 کی نگرانی اور مریضوں کے علاج معالجے  میں مدد ملے گی۔ یہ روانڈا کے لیے امریکہ کی طویل مدتی مالی معاونت میں نیا اضافہ ہے۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ روانڈا کو صحت کے شعبے میں 1.5 بلین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 2.6 بلین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

سینیگال: صحت کے شعبے میں 1.9 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی، پانی و نکاسی آب، بیماری سے بچاؤ اور اس پر قابو پانے، صحت عامہ کے حوالے سے پیغام رسانی اور ایسے دیگر کاموں  میں مدد ملے گی۔ سینیگال میں امریکہ صرف صحت کے شعبے میں قریباً 880 ملین ڈالر امداد دے چکا ہے جبکہ گزشتہ 20 برس میں دی جانے والی مجموعی امداد کا حجم 2.8 بلین ڈالر ہے۔

جنوبی افریقہ: کوویڈ۔19 کا مقابلہ کرنے کے لیے صحت کے شعبے میں دی جانے والی 2.77 ملین ڈالر کی معاونت سے بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی، پانی و نکاسی آب، بیماری سے بچاؤ اور روک تھام، صحت عامہ کے حوالے سے پیغام رسانی اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ امریکہ گزشتہ 20 برس میں جنوبی افریقہ میں صحت کے شعبے میں قریباً 6 بلین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 8 بلین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

تنزانیہ: صحت کے شعبے میں ایک ملین ڈالر کی معاونت سے بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی، پانی و نکاسی آب، بیماری سے بچاؤ اور روک تھام، صحت عامہ کے حوالے سے پیغام رسانی اور دیگر کاموں میں مدد ملے گی۔ امریکہ نے گزشتہ 20 برس میں صرف صحت کے شعبے میں تنزانیہ کو 4.9 ملین ڈالر مالی معاونت فراہم کی ہے جبکہ اس کے لیے مجموعی امدادی رقم کا حجم 7.5 بلین ڈالر ہے۔

زیمبیا: صحت کے شعبے میں 1.87 ملین ڈالر کی امداد سے بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی، پانی و نکاسی آب، بیماری سے بچاؤ اور روک تھام، صحت عامہ کے حوالے سے پیغام رسانی اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ یہ زیمبیا کے لیے امریکہ کی مالی مدد میں نیا اضافہ ہے۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے یہاں صرف صحت کے شعبے میں 3.9 بلین جبکہ مجموعی طور پر 4.9 بلین ڈالر خرچ کیے ہیں۔ 

زمبابوے: صحت کے شعبے میں 470000 ڈالر کی مالی معاونت سے حکومت کو بیماری کی تشخیص کے لیے بڑے پیمانے پر لیبارٹریاں قائم کرنے، انفلوائنزا جیسی بیماریوں کے مریضوں میں کوویڈ۔19 کا پتا چلانے کی سرگرمیوں اور ملک میں داخلے کے مقامات کے لیے صحت عامہ کے حوالے سے ہنگامی منصوبے پر عملدرآمد میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے زمبابوے کو صرف صحت کے شعبے میں 1.2 بلین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 3 بلین ڈالر امداد دی ہے۔

صحت کے شعبے میں دی جانے والی مالی معاونت کے علاوہ افریقہ کے ممالک کو امدادی کاموں کے لیے بھی مالی مدد فراہم کی جا رہی ہے۔ اس سلسلے میں وسطی جمہوریہ افریقہ کو 3 ملین، جمہوری کانگو کو 6 ملین، صومالیہ کو 7  ملین، جنوبی سوڈان کو 8 ملین اور سوڈان کو 8 ملین ڈالر دے جا رہے ہیں۔ اس معاونت سے بنیادی طور پر پانی اور نکاسی آب کی سرگرمیوں کو بہتر بنانے میں مدد ملے گی۔ امریکہ طویل عرصہ سے فیاضانہ طور سے ان ممالک اور یہاں کے لوگوں  کی صحت اور بہبود میں  مدد دیتا  چلا آیا ہے اور حالیہ  امداد گزشتہ 20 برس میں امریکہ کی جانب سے فراہم کردہ مالی مدد میں نیا اضافہ ہے۔ اس سلسلے میں وسطی جمہوریہ افریقہ کو صحت کے شعبے میں 4.5 ملین اور مجموعی طور پر 822.6 ملین ڈالر، جمہوریہ کانگو کے لیے صحت کے شعبے میں قریباً 1.6 بلین ڈالر اور مجموعی طور پر 6.5 بلین ڈالر، صومالیہ کے لیے صحت کے شعبے میں قریباً 30 ملین ڈالر اور مجموعی طور پر 5.3 بلین ڈالر۔ جنوبی سوڈان کے لیے صحت کے شعبے میں 405 ملین ڈالر سے زیادہ اور مجموعی طور پر 6.4 بلین ڈالر اور سوڈان کے لیے صحت کے شعبے میں 3 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 1.6 بلین ڈالر شامل ہیں۔

یورپ اور یوریشیا:

البانیہ: صحت کے شعبے میں 700000 ڈالر امداد سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے البانیہ میں صحت کے شعبے میں 51.8 ملین ڈالر خرچ کیے ہیں جبکہ یہاں مجموعی امریکی امداد کا حکم 693 ملین ڈالر ہے۔

آرمینیا: صحت کے شعبے میں 1.1 ملین ڈالر امداد سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ امریکہ نے گزشتہ 20 سال میں آرمینیا کو صحت کے شعبے میں قریباً 106 ملین ڈالر مالی معاونت فراہم کی ہے جبکہ مجموعی امداد کے طور پر اسے اب تک 1.57 بلین ڈالر فراہم کیے جا چکے ہیں۔

آزربائیجان: صحت کے شعبے میں 1.7 ملین ڈالر کی امداد سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے آزربائیجان کو صحت کے شعبے میں 41 ملن ڈالر امداد دی ہے جبکہ اس کے لیے مجموعی امدادی رقم کا حجم 890 ملین ڈالر ہے۔

بیلارس: صحت کے شعبے میں 1.3 ملین ڈالر امداد سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ یہ نئی مالی معاونت بیلارس کے لیے گزشتہ 20 برس میں امریکی امداد میں نیا اضافہ ہے۔ اس سے پہلے امریکہ یہاں صحت کے شعبے میں قریباً 1.5 ملین ڈالر خرچ کر چکا ہے جبکہ مجموعی طور پر اسے 301 ملین ڈالر امداد دے چکا ہے ۔

بوسنیا ہرزیگووینا: صحت کے شعبے میں 1.2 ملین ڈالر کی معاونت سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ امریکہ گزشتہ 20 برس میں بوسنیا ہرزیگووینا کو صرف صحت کے شعبے میں 200000 ڈالر اور مجموعی طور پر 1.1 بلین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

جارجیا: صحت کے شعبے میں 1.1 ملین ڈالر کی معاونت سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ جارجیا میں صحت کے شعبے میں قریباً 139 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 3.6 بلین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

کوسوو: صحت کے شعبے میں 1.1 ملین ڈالر کی معاونت سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ کوویڈ۔19 کا مقابلہ کرنے کے لیے یہ امداد کوسوو کے لیے امریکی کی اب تک مالی معاونت میں نیا اضافہ ہے۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ اسے صحت کے شعبے میں 10 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 773 ملین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

مولدووا: صحت کے شعبے میں 1.2 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ اس کے علاوہ گزشتہ  20 برس میں امریکہ مولدووا کو صحت کے شعبے میں 42 ملین ڈالر امداد دے چکا ہے جبکہ اسے دی جانے والی مجموعی امدادی رقم کا حکم ایک بلین ڈالر ہے۔

شمالی مقدونیہ: صحت کے شعبے میں 1.1 ملین ڈالر کی امداد سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس کے دوران امریکہ شمالی مقدونیہ کو صحت کے شعبے میں قریباً 11.5 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 738 ملین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

سربیا: صحت کے شعبے میں 1.2 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے سربیا کو صحت کے شعبے میں 5.4 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر ایک بلین ڈالر امداد فراہم کی ہے۔

یوکرائن: صحت اور امدادی کاموں میں 1.2 ملین ڈالر کی معاونت سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ نے یوکرائن کو صحت کے شعبے میں 362 ملین ڈالر امداد دی ہے جبکہ اس کے لیے مجموعی امریکی امداد کا حجم 5 بلین ڈالر ہے۔

ازبکستان: صحت کے شعبے میں قریباً 848000 ڈالر کی مالی معاونت سے لیبارٹری سسٹم کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی تلاش اور واقعات کی بنیاد پر نگرانی، بیماری کے خلاف جوابی اقدامات اور تیاری کے لیے ماہرین کی تکنیکی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ امریکہ گزشتہ 20 برس میں ازبکستان کو صحت کے شعبے میں 122 ملین ڈالر کی مالی معاونت مہیا کر چکا ہے جبکہ اس عرصہ میں اسے دی جانے والی مجموعی امداد 962 ملین ڈالر ہے۔

ایشیا:

افغانستان: صحت اور امدادی کاموں کے لیے فراہم کی جانے والی قریباً 5 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے اندرون ملک بے گھر افراد میں کوویڈ۔19 کی نشاندہی اور علاج میں مدد ملے گی۔ علاوہ ازیں امریکہ نے موجودہ وسائل میں سے 10 ملین ڈالر افغانستان میں کوویڈ۔19 کے خلاف عالمی ادارہ صحت کے ہنگامی منصوبے کو بھی منتقل کیے ہیں۔ ان وسائل سے بیماری کی نگرانی، لیبارٹریوں کی حالت بہتر بنانے، مریضوں کے انتظام و انصرام، بیماری سے بچاؤ اور اس پر قابو پانے، مقامی لوگوں کو بیماری کے بارے میں آگاہی مہیا کرنے اور حکومت افغانستان کو تکنیکی معاونت مہیا کرنے میں مدد ملے گی۔

بنگلہ دیش: صحت کے شعبے میں 3.4 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے بیماروں کو علاج معالجے کی فراہمی اور بیماری کی نگرانی سے متعلق سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے بنگلہ دیش کو صرف صحت کے شعبے میں ایک بلین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 4 بلین ڈالر امداد دی ہے۔

برما: صحت اور امدادی کاموں کے سلسلے میں قریباً 3.8 ملین ڈالر کی معاونت سے پانی و نکاسی آب، کوویڈ۔19 کے مریضوں کے علاج معالجے، واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، ربط اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے برما کو صحت کے شعبے میں 176 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 1.3 بلین ڈالر امداد فراہم کی ہے۔

کمبوڈیا: صحت کے شعبے میں قریباً 2 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام قائم کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے کمبوڈیا کو صحت کے شعبے میں 730 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 1.6 بلین ڈالر امداد دی ہے۔

انڈیا: 2.9 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں انڈیا کے لیے امریکہ کی مالی معاونت میں یہ نیا اضافہ ہے۔ اس دوران امریکہ اسے صحت کے شعبے میں 1.4 بلین جبکہ مجموعی طور پر 2.8 بلین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

انڈونیشیا: صحت کے شعبے میں 2.3 ملین ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام قائم کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ انڈونیشیا کو صحت کے شعبے میں ایک بلین جبکہ مجموعی طور پر 5 بلین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

قازقستان: صحت کے شعبے میں 800000 ڈالر سے زیادہ مالی معاونت سے لیبارٹریوں کا نظام قائم کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ امریکہ نے گزشتہ 20 برس کے دوران قازقستان میں صحت کے شعبے میں 86 ملین ڈالر سے زیادہ خرچ کیے ہیں جبکہ اس کے لیے مجموعی امریکی امداد کا حجم 2 بلین ڈالر سے زیادہ ہے۔

کرغیزستان: صحت کے شعبے میں قریباً 883000 ڈالر کی مالی معاونت لیبارٹریوں کا نظام قائم کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ کرغیزستان کو صحت کے شعبے میں 120 ملین ڈالر سے زیادہ مالی مدد دے چکا ہے جبکہ اس کے لیے مجموعی امریکی امداد کا حجم قریباً 1.2 بلین ڈالر ہے۔

لاؤس: صحت کے شعبے میں قریباً 2 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ لاؤس کو صحت کے شعبے میں قریباً 92 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 348 ملین ڈالر دے چکا ہے۔

منگولیا: صحت کے شعبے میں قریباً 1.2 ملین ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ نے منگولیا کو صحت کے شعبے میں قریباً 106 ملین ڈالر مالی معاونت فراہم کی ہے جبکہ مجموعی امداد کی مد میں اسے اب تک ایک بلین ڈالر دیے جا چکے ہیں۔

نیپال: صحت کے شعبے میں قریباً 1.8 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے نیپال کو صحت کے شعبے میں 603 ملین ڈالر سے زیادہ جبکہ مجموعی طور پر 2 بلین ڈالر امداد فراہم کی ہے۔

پاپوا نیوگنی: صحت کے شعبے میں 1.2ملین ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ نے پاپوا نیوگنی کو صحت کے شعبے میں 52 ملین ڈالر سے زیادہ مالی امداد فراہم کی ہے جبکہ مجموعی امریکی امداد کا حجم قریباً 90 ملین ڈالر ہے۔

الکاہل کے جزائر: صحت کے شعبے میں حکومتوں کو 2.3 ملین ڈالر معاونت مہیا کی گئی ہے جس سے لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ دس برس میں امریکہ نے بحرالکاہل کے جزائر میں صحت کے شعبے میں مدد کے لیے 620 ملین ڈالر سے زیادہ رقم مہیا کی ہے۔ گزشتہ 20 سال میں جزائر کے لیے مجموعی امریکی امداد کا حجم 5.21 بلین ڈالر سے زیادہ ہے۔

پاکستان: صحت کے شعبے میں ایک ملین ڈالر کی معاونت سے پاکستان کو ملک میں وبا کی نگرانی کا نظام بہتر بنانے اور لوگوں کو اس بیماری کی نشاندہی کے لیے بہتر طور سے تیار کرنے میں مدد  ملے گی۔ امریکہ نے پاکستا ن کو کوویڈ۔19 قومی منصوبے میں مدد دینے کے لیے موجودہ مالی وسائل میں سے بھی ایک ملین ڈالر مختص کیے ہیں جن سے طبی عملے کی تربیت اور دیگر فوری ضروریات پوری کرنے میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے پاکستان کو صرف صحت کے شعبے میں ہی 1.1 بلین ڈالر جبکہ مجموعی امداد میں 18.4 بلین ڈالر دیے ہیں۔

فلپائن: صحت کے شعبے میں قریباً 4 ملین ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ فلپائن کو صحت کے شعبے میں 582 ملین جبکہ مجموعی طور پر 4.5 بلین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

سری لنکا: صحت کے شعبے میں 1.3 ملین ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ سری لنکا کو صحت کے شعبے میں 25 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر ایک بلین ڈالر فراہم کر چکا ہے۔

تاجکستان: صحت کے شعبے میں قریباً 866000 ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ نے تاجکستان کو صحت کے شعبے میں 125 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر ایک بلین ڈالر امداد دی ہے۔

تھائی لینڈ: صحت کے شعبے میں قریباً 1.2 ملین ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 برس میں امریکہ نے تھائی لینڈ کو صحت کے شعبے میں 213 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر ایک بلین ڈالر امداد مہیا کی ہے۔

ترکمانستان: صحت کے شعبے میں معاونت کے لیے قریباً 920000 فراہم کیے گئے ہیں جس سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال کے دوران امریکہ نے ترکمانستان کو صحت کے شعبے میں 21.5 ملین ڈالر سے زیادہ جبکہ مجموعی طور پر 207 ملین ڈالر امداد دی ہے۔

ٹیمور لیسٹے: صحت کے شعبے میں 1.1 ملین ڈالر کی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ ٹیمور لیسٹے کو صحت کے شعبے میں 70 ملین جبکہ مجموعی طور پر 542 ملین ڈالر فراہم کر چکا ہے۔

ویت نام: صحت کے شعبے میں قریباً 3 ملین ڈالر کی مالی معاونت سے حکومت کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ ویت نام کو صحت کے شعبے میں 706 ملین جبکہ مجموعی طور پر 1.8 بلین ڈالر امداد دے چکا ہے۔

ایشیا میں علاقائی سطح پر کوششیں: صحت کے شعبے میں 1.6 ملین ڈالر کی معاونت سے حکومتوں کو لیبارٹریوں کا نظام تیار کرنے، مریضوں میں بیماری کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف ردعمل اور تیاری کےلیے ماہرین کی تکنیکی معاونت، بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی کا نظام بہتر بنانے، بیماری سے بچاؤ اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ امریکہ نے گزشتہ 20 برس میں ایشیائی  اممالک کی انفرادی مدد کے علاوہ علاقائی سطح پر صحت کے شعبے میں معاونت کے لیے 226 ملین ڈالر مہیا کیے ہیں جبکہ مجموعی طور پر 3 بلین ڈالر سے زیادہ امداد فراہم کی ہے۔

لاطینی امریکہ اور غرب الہند:

جمیکا: صحت کے شعبے میں 700000 ملین ڈالر کی معاونت سے بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی، پانی، نکاسی آب، بیماریوں کی روک تھام اور ان پر قابو پانے، کوویڈ۔19 کے مریضوں کے علاج، لیبارٹریوں کو بہتر بنانے اور وائرس کے پھیلاؤ کی نگرانی میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ نے جمیکا کو صحت کے شعبے میں 87 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 619 ملین ڈالر امداد فراہم کی ہے۔

پیراگوئے: صحت کے شعبے میں 1.3 ملین ڈالر امداد سے بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی، پانی، نکاسی آب، بیماریوں کی روک تھام اور ان پر قابو پانے، کوویڈ۔19 کے مریضوں کے علاج، لیبارٹریوں کو بہتر بنانے اور وائرس کے پھیلاؤ کی نگرانی میں مدد ملے گی۔ امریکہ پیراگوئے کو طویل مدتی مالی معاونت فراہم کر رہا ہے۔ گزشتہ 20 سال میں اسے صحت کے شعبے میں 42 ملین ڈالر جبکہ مجموعی طور پر 456 ملین ڈالر دیے گئے ہیں۔

ہیٹی: صحت کے شعبے میں 2.2 ملین ڈالر کی معاونت سے بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی، پانی، نکاسی آب، بیماریوں کی روک تھام اور ان پر قابو پانے، کوویڈ۔19 کے مریضوں کے علاج، لیبارٹریوں کو بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ امریکہ نے گزشتہ 20 برس میں ہیٹی کو صحت کے شعبے میں 1.8 بلین ڈالر امداد دی ہے جبکہ اس کے لیے مجموعی امریکی امداد کا حجم قریباً 6.7 بلین ڈالر ہے۔

غرب الہند: مشرقی غرب الہند کی حکومتوں کو صحت کے شعبے میں دیے جانے والے 1.7 ملین ڈالر سے بیماری کے بارے میں اطلاعات کی فراہمی، پانی، نکاسی آب، بیماریوں کی روک تھام اور ان پر قابو پانے، کوویڈ۔19 کے مریضوں کے علاج، لیبارٹریوں کو بہتر بنانے اور وائرس کے پھیلاؤ کی نگرانی میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ ان حکومتوں کو صحت کے شعبے میں 840 ملین ڈالر فراہم کر چکا ہے جبکہ انہیں ملنے والی مجموعی امریکی امداد کا حجم 840 ملین ڈالر ہے۔

امریکہ کی جانب سے کولمبیا کو 8.5 ملین جبکہ وینزویلا کو 9 ملین ڈالر امداد دی جا رہی  ہے جس سے وائرس کے پھیلاؤ کی نگرانی، پانی اور نکاسی آب کے نظام، کوویڈ۔19 کا پھیلاؤ روکنے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ امریکہ نے گزشتہ 20 برس کے دوران کولمبیا میں صحت کا نظام بہتر بنانے پر قریباً 32.5 ملین ڈالر خرچ کیے ہیں جبکہ اسے مجموعی طور پر 12 بلین ڈالر امداد فراہم کی ہے۔ وینزویلا میں امریکہ نے گزشتہ 20 سال میں صحت کے شعبے میں براہ راست 1.3 ملین ڈالر خرچ کیے ہیں جبکہ اسے دی جانے والی مجموعی امریکی امداد کا حجم 278 ملین ڈالر ہے۔

مشرقی وسطیٰ و شمالی افریقہ:

مراکش: صحت کے شعبے میں 670000 ڈالر کی معاونت سے لیبارٹری  نظام کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف اقدامات اور تیاری کے لیے تکنیکی ماہرین کی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال کے دوران امریکہ نے مراکش کو صحت کے شعبے میں 64.5 ملین ڈالر امداد دی ہے جبکہ اسے ملنے والی مجموعی امریکی امداد کا حجم 2.6 بلین ڈالر ہے۔

تیونس: صحت کے شعبے میں 700000 ڈالر معاونت سے لیبارٹری نظام کی تیاری، بیماری کے مریضوں کی نشاندہی اور واقعات کی بنیاد پر بیماری کی نگرانی، بیماری کے خلاف اقدامات اور تیاری کے لیے تکنیکی ماہرین کی مدد، اطلاعات کی فراہمی بہتر بنانے اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال کے عرصہ میں امریکہ نے تیونس کو صحت کے شعبے میں 7 ملین سے زیادہ مالی مدد فراہم کی ہے جبکہ اسے ملنے والی مجموعی امداد کا حجم 1.3 بلین ڈالر ہے۔

عراق: صحت کے شعبے اور امدادی کاموں کے لیے فراہم کیے جانے والے 15.5 ملین ڈالر سے لیبارٹریوں کی تیاری، داخلے کے مقامات پر صحت عامہ سے متعلق ہنگامی منصوبے پر عملدرآمد، مریضوں کی نشاندہی اور انفلوئنزا جیسی بیماریوں کی واقعات کی بنیاد پر نگرانی اور دیگر سرگرمیوں میں مدد ملے گی۔ گزشتہ 20 سال میں امریکہ نے عراق کو صرف صحت کے شعبے میں ہی 4 بلین ڈالر فراہم کیے ہیں جبکہ ملک کو مجموعی امداد میں اب تک 70 بلین ڈالر دیے جا چکے ہیں۔

امریکہ لیبیا کو صحت کے شعبے میں 6 ملین ڈالر جبکہ شام کو 16.8 ملین ڈالر فراہم کر رہا ہے۔ امریکہ نے گزشتہ 20 سال میں لیبیا کو مجموعی طور پر 715 ملین سے زیادہ جبکہ اسی عرصہ میں شام کو 6.1 بلین سے زیادہ امداد دی ہے۔

اقوام متحدہ کی تنظیمیں اور ادارے:

ڈبلیو ایچ او اور یونیسف جیسے عالمی اداروں کے ذریعے عالمگیر اور علاقائی پروگرامنگ کے لیے 24.3 ملین ڈالر فراہم کیے گئے ہیں۔

کوویڈ۔19 کے خلاف اقوام متحدہ کے عالمگیر امدادی منصوبے میں یواین ایچ سی آر کے لیے 64 ملین ڈالر امداددی گئی ہے۔ یہ امداد افریقہ، ایشیا، مشرق وسطیٰ ا ور جنوبی امریکہ کے ایسے  ممالک میں مہاجرین، اندرون ملک بے گھر ہونے والوں اور ان کی میزبان آبادی میں کوویڈ۔19 سے لاحق مسائل سے نمٹنے پر خرچ کی جائے گی جو پہلے ہی پیچیدہ انسانی بحرانوں کا سامنا کر رہے ہیں۔

تحفظ صحت کے عالمگیر لائحہ عمل کے تحت امریکہ کی جانب سے فراہم کی جانے والی مالی مدد بشمول اس عالمگیر بحران سے نمٹنے کے لیے ہماری جانب سے دیگر معاونت کا مقصد متاثرہ علاقوں میں بیماری کا پھیلاؤ کم سے کم رکھ کر امریکی عوام کا تحفظ کرنا اور وبائی امراض کے خلاف مقامی اور عالمی سطح پر کیے جانے والے اقدامات کو بہتر بنانا ہے۔

یہ نئی مالی معاونت عالمگیر صحت اور امدادی کاموں میں امریکہ کے قائدانہ کردار کو مزید نمایاں کرتی ہے۔ یہ معاونت دنیا بھر میں بیماری کے خلاف اقدامات کے لیے بہت سے محکموں اور اداروں بشمول بیماری پر قابو پانے اور روک تھام کے مراکز (سی ڈی سی) پر محیط امریکی حکومت کے ایک وسیع تر پیکیج کا حصہ ہے۔ 2009 سے اب تک امریکی ٹیکس دہندگان دنیا بھر میں صحت کے شعبے میں معاونت کے لیے فیاضانہ طور سے 100 بلین ڈالر جبکہ امدادی کاموں کے لیے 70 بلین ڈالر دے چکے ہیں۔ ہمارا ملک طویل مدتی ترقی اور اپنے شراکت داروں کے ساتھ صلاحیت میں اضافے کے حوالے سے صحت کے شعبے اور امدادی کاموں نیز وقتاً فوقتاً سامنے آنے والے بحرانوں کے خلاف ہنگامی اقدامات کی کوششوں میں مالی مدد دینے والا سب سے بڑا ملک ہے۔ اس رقم نے زندگیاں بچائی ہیں، انتہائی کمزور لوگوں کو تحفظ دیا ہے، صحت کے ادارے قائم کرنے میں مدد دی ہے اور معاشروں و ممالک میں استحکام کو فروغ دیا ہے۔

اس بحران کا مقابلہ کرنے کے لیے امریکی حکومت کی مجموعی مالی معاونت کے بارے میں مزید معلومات کے لیے براہ مہربانی [email protected] پر رابطہ کیجیے۔

کسی مخصوص ملک میں بیماری کے خلاف امدادی سرگرمیوں کے بارے میں تفصیلات جاننے کے لیے براہ مہربانی [email protected] پر یوایس ایڈ سےرابطہ کیجیے۔

یواین ایچ سی آر کے لیے امریکہ کی امداد کے بارے میں تفصیلات سے آگاہی کے لیے براہ مہربانی [email protected] پر دفتر خارجہ کے شعبہ آبادی، مہاجرین و مہاجرت سے رابطہ کیجیے۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں