rss

ایران کا خلائی پروگرام پُرامن نہیں، خطرناک ہے

English English, العربية العربية, Français Français, Português Português, Русский Русский, Español Español

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
وزیر خارجہ مائیکل آر پومپیوکا بیان
25 اپریل 2020

 

سالہا سال تک ایران نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کا خلائی پروگرام خالصتاً پُرامن اور سویلین مقاصد کے لیے ہے۔ ٹرمپ انتظامیہ نے اس کہانی پر کبھی اعتبار نہیں کیا۔ غیرملکی دہشت گرد تنظیم کے طور پر نامزد ایرانی پاسداران انقلاب کی جانب سے اس ہفتے عسکری مقاصد کے لیے مصنوعی سیارہ لانچ کیے جانے سے وہ بات واضح ہو گئی ہے  جو ہم کہتے چلے آئے تھے کہ ایران کا خلائی پروگرام نہ تو پُرامن ہے اور نہ ہی یہ مکمل طور پر سویلین مقاصد کے لیے ہے۔

فروری 2020 میں ایران کے قومی خلائی ادارے کے سربراہ مرتضیٰ بیراری نے کہا تھا کہ ایران ”خلا کے پُرامن استعمال” کا حامی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ ”خلا میں ہماری تمام تر سرگرمیاں شفاف ہیں۔” ایران کے وزیر اطلاعات نے اس ہفتے یہ دعویٰ کیا کہ ”ایران کا خلائی پروگرام پُرامن ہے۔” حالیہ دنوں فوج کی جانب سے خلا میں لانچ کی تیاری خفیہ طور سے کی گئی  اور اسے خفیہ طور پر ہی بھیجا گیا۔ اس سے ثابت ہوتا ہے کہ یہ بیانات جھوٹ تھے۔

حالیہ مصنوعی سیارہ اور ماضی میں خلا میں راکٹ بھیجنے کے لیے استعمال ہونے والی مشینری کی ٹیکنالوجی بلسٹک میزائل بشمول طویل فاصلے تک مار کرنے والے جیسا کہ بین البراعظم بلسٹک میزائلوں (آئی سی بی ایم)  کی ٹیکنالوجی سے ملتی جلتی اور اس سے قابل تبادلہ ہے۔ کسی ملک نے جوہری ہتھیار داغنے کے مقصد سے ہٹ کر کبھی آئی سی بی ایم اہلیت کے حصول کی کوشش نہیں کی۔

تمام امن پسند ممالک ایران کی جانب سے بلسٹک میزائل لے جانے کی اہلیت کی حامل ٹیکنالوجی تیار کرنے کا اقدام  مسترد کریں اور اس کے خطرناک میزائل پروگرام کو روکنے کے لیے متحد ہوں۔ ابتدا میں دنیا کے ممالک کو ایران پر اقوام متحدہ کی جانب سے روایتی اسلحے کی پابندی میں توسیع کی حمایت کرنی چاہیے جو اس برس اکتوبر میں ختم ہو رہی ہے۔ دنیا میں ریاستی سطح پر دہشت گردی اور یہود مخالفت کے سب سے بڑے معاون کو روایتی ہتھیار خریدنے اور بیچنے کی اجازت نہیں ہونی چاہیے۔ ہم یورپی یونین سے بھی کہتے ہیں کہ وہ ایسے افراد اور اداروں پر پابندی عائد کرے جو ایران کے میزائل پروگراموں کے لیے کام کر رہے ہیں۔

جس وقت ایران کے لوگ کرونا وائرس کی وبا میں تکالیف کا سامنا کر رہے ہیں اور ہلاک ہو رہے ہیں تو ایسے میں ایرانی حکومت کو اپنے وسائل اور کوششیں اشتعال انگیز عسکری مقاصد کے لیے ضائع کرتے دیکھنا افسوسناک ہے۔ ایسے اقدامات سے ایرانی عوام کی کوئی مدد نہیں ہو گی۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں