rss

جوہری عدم پھیلاؤ کے معاہدے میں توسیع کے 25 سال

Русский Русский, English English, العربية العربية, हिन्दी हिन्दी

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
ترجمان دفتر خارجہ مورگن اورٹیگس کا بیان
11 مئی 2020

 

11 مئی 1995 کو جوہری ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ کے معاہدے میں فریق ممالک نے یہ فیصلہ کیا کہ عدم پھیلاؤ کے معاہدے یا این پی ٹی کے نام سے معروف یہ  معاہدہ غیرمعینہ مدت تک موثر رہنا چاہیے۔ این پی ٹی کا آغاز 1970 میں ہوا تھا اور ابتدائی طور پر اِس معاہدے کی مدت 25 برس رکھی گئی تھی۔ اسی لیے 1995 میں این پی ٹی کے جائزے اور اس میں توسیع کے لیے ہونے والی کانفرنس کے سامنے دو راستے تھے کہ آیا اِس معاہدے میں توسیع ہونی چاہیے اور اگر ایسا کیا جائے تو کیا اس کی کوئی مقررہ مدت ہونی چاہیے، یا یہ معاہدہ غیرمعینہ مدت تک موثر رہنا چاہیے۔ دانشمندانہ طور سے این پی ٹی کے فریقین نے معاہدے میں غیرمعینہ مدت تک توسیع کا فیصلہ کیا جس سے یہ یقینی بنانے میں مدد ملی  کہ جوہری ہتھیاروں کا پھیلاؤ روکنے کی کوششوں کی بنیاد قائم رہے گی۔ آج پچیس سال بعد ہم اس دانشمندانہ فیصلے کی خوشی منا رہے ہیں۔ پچاس سال بعد بھی یہ معاہدہ عدم پھیلاؤ کی مصدقہ ضمانتوں کے لیے ایک قابل اعتبار بنیاد مہیا کرتا ہے جس کی بدولت جوہری توانائی کے پُرامن استعمال اور جوہری اسلحے پر کنٹرول اور اس کے خاتمے کی کوششوں کے لیے عالمگیر تعاون ممکن ہوتا ہے۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں