rss

جی7 وزرائے خارجہ کا ہانگ کانگ کی صورتحال پر بیان

हिन्दी हिन्दी, English English

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
دفتر خارجہ کا بیان
17 جون 2020

 

درج ذیل بیان کا متن امریکہ، کینیڈا، فرانس، جرمن، اٹلی، جاپان اور برطانیہ کی حکومتوں اور یورپی یونین کے اعلیٰ سطحی نمائندے کی جانب سے جاری کیا گیا۔

آغاز متن:

ہم امریکہ، کینیڈا، فرانس، جرمنی، اٹلی، جاپان اور برطانیہ کے وزرائے خارجہ اور یورپی یونین کا اعلیٰ سطحی نمائندہ ہانگ کانگ پر قومی سلامتی کا قانون مسلط کرنے سے متعلق چین کے فیصلے پر اپنی سنگین تشویش کا اظہار کرتے ہیں۔

چین کا فیصلہ ہانگ کانگ کے بنیادی قانون اور اقوام متحدہ میں درج چین۔برطانیہ مشترکہ اعلامیے کے اصولوں سے مطابقت نہیں رکھتا۔ چین قانونی طور پر ان اصولوں کی پاسداری کا پابند ہے۔ قومی سلامتی کے اس مجوزہ قانون سے ”ایک ملک، دو نظام” کا اصول اور اس علاقے کی اعلیٰ درجے کی خودمختاری کو سنگین خطرات لاحق ہو جائیں گے۔ اس فیصلے سے اُس نظام کو نقصان پہنچے گا جس کی بدولت ہانگ کانگ کو پھلنے پھولنے اور سالہا سال تک ترقی کا موقع ملا ہے۔

ہانگ کانگ میں آزادانہ مکالمہ، فریقین سے مشاورت اور محفوظ حقوق اور آزادیوں کا احترام لازمی اہمیت رکھتا ہے۔

ہمیں اس امر پر بھی انتہائی تشویش ہے کہ اس فیصلے سے ہانگ کانگ کی تمام آبادی کے بنیادی حقوق اور آزادیاں محدود اور خطرے سے دوچار ہو جائیں گی جو انہیں قانون اور ایک آزادانہ نظام انصاف کے ذریعے حاصل ہیں۔

ہم چین کی حکومت پر زور دیتے ہیں کہ وہ اس فیصلے پر نظرثانی کرے۔

اختتام متن۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں