rss

روہنگیا مہاجرین کی مدد پر امریکہ کا انڈونیشیا کے لیے اظہار ستائش ترجمان دفتر خارجہ مورگن اورٹیگس کا بیان

English English, العربية العربية, हिन्दी हिन्दी

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
9 جولائی 2020

 

امریکہ 24 جون کو انڈونیشیا کی سمندری حدود میں 99 روہنگیا مہاجرین کی آمد پر ان کی مدد کے لیے انڈونیشیا کی حکومت اور آچے میں مقامی حکام کے اقدامات کو سراہتا ہے اور یواین ایچ سی آر اور آئی او ایم کے ساتھ انڈونیشیا  کی قریبی ہم آہنگی کا اعتراف کرتا ہے۔ ہم اس غیرمحفوظ آبادی سے متعلق امدادی اقدامات اور فوری توجہ کے متقاضی اس مسئلے پر آسیان خطے میں رہنما کردار پر انڈونیشیا کی تعریف کرتے ہیں۔ اس سے خطے کے ممالک اور پوری عالمی برادری کے لیے ایک عمدہ مثال قائم ہوئی ہے۔ امریکہ تلاش اور بچاؤ کی کارروائیوں میں علاقائی سطح پر ذمہ داریاں بانٹنے اور باہمی تعاون نیز خاص طور پر اس وبا کے دوران آسیان ممالک کے ساحلوں پر آنے والے ان انتہائی غیرمحفوظ لوگوں کو محفوظ اور انسانی انداز میں قبول کرنے کی حوصلہ افزائی کرتا ہے۔

اس کے ساتھ ہمیں برمی فوج کی جانب سے راخائن ریاست کے علاقے ریتھے ڈاؤنگ  میں حملے کی اطلاعات پر گہری تشویش ہے جس کے نتیجے میں بظاہر راخائن اور روہنگیا نسل کے باشندوں سمیت ہزاروں افراد کے بے گھر ہو گئے ہیں۔ ہم نے برما کی فوج اور آراکان آرمی کے مابین بڑھتے ہوئے تشدد اور مقامی آبادیوں پر اس کے اثرات پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ہم جنگ کے خاتمے، پرامن بات چیت، مقامی آبادیوں کو تحفظ دینے کے لیے ازسرنو نوششوں اور امدادی تنظیموں کو متاثرہ علاقوں میں رسائی دینے کے اپنے سابقہ مطالبات کا اعادہ کرتے ہیں۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں