rss

صدر ایردوگان کی حماس کی قیادت سے ملاقات

العربية العربية, English English, हिन्दी हिन्दी

امریکی دفتر خارجہ
دفتر برائے ترجمان
ترجمان دفتر خارجہ مورگن اورٹیگس کا بیان
25 اگست 2020

 

امریکہ ترک صدر ایردوگان کی جانب سے 22 اگست کو استنبول میں حماس کے دو رہنماؤں کی میزبانی پر سخت ناپسندیدگی کا اظہار کرتا ہے۔ حماس امریکہ اور یورپی یونین کی جانب سے نامزد دہشت گرد تنظیم ہے اور صدر ایردوگان نے اس کے جن دو عہدیداروں کی میزبانی کی ہے وہ خصوصی طور پر نامزد کردہ عالمی دہشت گرد ہیں۔ امریکہ کا ‘انعام برائے انصاف پروگرام’ ان میں سے ایک شخص کے  دہشت گرد حملوں، ہائی جیکنگ اور اغوا کے متعدد واقعات میں ملوث ہونے کے بارے میں معلومات اکٹھی کر  رہا ہے۔

صدر ایردوگان کی جانب سے اس دہشت گرد تنظیم سے مسلسل رابطوں کے نتیجے میں ترکی عالمی برادری سے مزید دور ہو جائے گا، ان روابط سے فلسطینی عوام کے مفادات کو نقصان پہنچے گا اور غزہ سے کیے جانے والے دہشت گرد حملوں کی روک تھام کے لیے عالمگیر کوششیں کمزور پڑ جائیں گی۔ ہم ترک حکومت کے حماس کے ساتھ تعلقات کے بارے میں اپنے خدشات کا اعلیٰ ترین سطحوں پر اظہار کرتے رہیں گے۔ صدر ایردوگان نے اس سال دوسری مرتبہ حماس کی قیادت کا خیرمقدم کیا ہے۔ ایسی پہلی ملاقات یکم فروری کو ہوئی تھی۔


یہ ترجمہ ازراہِ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں