rss
تازہ ترین خبر
  • سب صاف کریں
تازہ ترین ای میل
تازہ ترین اطلاعات یا اپنے استعمال کنندہ کی ترجیحات تک رسائی کے لیے براہ مہربانی اپنی رابطے کی معلومات نیچے درج کریں
2017-11-28

یوایس ایڈ کے منتظم مارک گرین کی جانب سے کاروباری خواتین کو بااختیار بنانے کی نئی کوششوں کا اعلان

اس ہفتے انڈین شہر حیدرآباد میں امریکہ اور انڈیا کاروباری نظامت کی عالمگیر کانفرنس (جی ای ایس) کی میزبانی کر رہے ہیں۔ آٹھ سال کے عرصہ میں 'جی ای ایس' کاروباری نظامت کے حوالے سے ایک نمایاں سالانہ اجتماع کی حیثیت اختیار کر چکی ہے جس میں اس برس دنیا بھر کے 150 ممالک سے 1500 کاروباری منتظمین، سرمایہ کار اور کاروباری معاونین شرکت کر رہے ہیں۔


کاروباری نظامت کی عالمی کانفرنس

میں کاروباری نظامت کی عالمی کانفرنس کی حیدر آباد جیسے شہر میں میزبانی پر امریکہ اور یہاں موجود دیگر ممالک کے نمائندوں کی جانب سے آپ کا شکریہ ادا کرتی ہوں۔ یہ تیزرفتاری سے انڈیا کا ایجاداتی شہر بن کر سامنے آ رہا ہے۔ میں آج کی اس تقریب میں شرکت اور انڈیا کو پائیدار معیشت ، جمہوریت کا ایک مینار اور دنیا میں امید کی ایک علامت بنانے کی تمام تر کوششوں پر وزیر اعظم مودی کا بھی شکریہ ادا کرتی ہوں۔آپ کی کامیابیاں غیر معمولی ہیں۔بچپن میں چائے بیچنے سے لے کر انڈیا کا وزیر اعظم بننے تک آپ نے ثابت کیا ہے کہ اپنی حالت میں تبدیلی ممکن ہےاور اب آپ یہی وعدہ اپنے ملک کے لاکھوں لوگوں کے ساتھ بھی کر رہے ہیں۔ اس پر آپ کا شکریہ۔


شمالی کوریا کی جانب سے تازہ ترین میزائل تجربے پر وزیرخارجہ ٹلرسن کا بیان

امریکہ شمالی کوریا کی جانب سے بحیرہ جاپان میں کیے گئے تجربے کی کڑی مذمت کرتا ہے جو ممکنہ طور پر بین البراعظمی بلسٹک میزائل ہو سکتا ہے۔ اس تجربے سے بلاامتیاز شمالی کوریا کے ہمسایوں، خطے اور پوری دنیا کے استحکام کو خطرات لاحق ہیں۔


2017-11-27

کاروباری نظامت کی عالمی کانفرنس

میں کاروباری نظامت کی عالمی کانفرنس کی حیدر آباد جیسے شہر میں میزبانی پر امریکہ اور یہاں موجود دیگر ممالک کے نمائندوں کی جانب سے آپ کا شکریہ ادا کرتی ہوں۔ یہ تیزرفتاری سے انڈیا کا ایجاداتی شہر بن کر سامنے آ رہا ہے۔

دستیاب ہے:

کاروباری نظامت کی عالمی کانفرنس میں مقررین اور امریکی حکام

کاروباری نظامت کی عالمی کانفرنس 28 تا 30 نومبر انڈیا کے شہر حیدرآباد میں منعقد ہو رہی ہے۔ یہ پہلا موقع ہے کہ اس کانفرنس کا انعقاد جنوبی ایشیا میں عمل میں لایا گیا ہے۔ امریکہ اور انڈیا اس کانفرنس کے مشترکہ میزبان ہیں۔ انڈین وزیراعظم نریندرا مودی کانفرنس کا افتتاح کریں گے جبکہ صدارتی مشیر ایوانکا ٹرمپ اس کانفرنس میں امریکی وفد کی قیادت کریں گی۔


2017-11-24

تھامس ایل وجڈا اور مشیل بیکرنگ

تھامس ایل وجڈا قائم مقام نائب معاون وزیر برائے جنوبی و وسطی ایشیائی امور ٹام وجڈا امریکی دفتر خارجہ میں جنوبی و وسطی ایشیائی امور کے دفتر میں قائم مقام نائب معاون وزیر ہیں۔ انہوں نے 25 برس سے زیادہ عرصہ امریکی محکمہ خارجہ کی ملازمت کے دوران ممبئی، انڈیا میں قونصل جنرل اور رنگون…

دستیاب ہے:

نیویارک ٹائمز میں برائن بی ہُک کا مضمون

رواں ماہ کے آغاز میں صدر ٹرمپ نے سیئول میں قومی اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے 'دو کوریاؤں' کی المناک کہانی پر روشنی ڈالی تھی جن میں ایک آزاد، انصاف پرور اور پرامن جبکہ دوسرا غاصب، جابر اور خطرناک ہے۔ یہ تضاد امریکی قومی سلامتی کو درپیش انتہائی ہنگامی مسئلے کی بنیادی وجہ ہے۔ یہ حقیقت جنوبی کوریا کے ایک ہسپتال میں بھی واضح ہو جاتی ہے جہاں ڈاکٹر شمالی کوریا کے ایک زخمی اور کمزور سپاہی کا علاج کر رہے ہیں جو گزشتہ ہفتے کم جانگ ان کی غلام ریاست سے فرار ہو گیا تھا۔


2017-11-22

برما کی ریاست راخائن کا بحران حل کرنے کی کوششیں وزیرخارجہ ٹلرسن کا بیان

میں نے 15 نومبر کو برما میں نیپیٹا کا دورہ کیا جہاں ریاستی قونصلر آنگ سان سوکی اور مسلح افواج کے کمانڈر انچیف سینئر جنرل من آنگ لینگ سے میری الگ الگ ملاقات ہوئی۔ میں نے برما میں کامیاب جمہوری تبدیلی کے حوالے سے امریکہ کے مضبوط عزم کا اعادہ کیا جہاں منتخب حکومت اصلاحات کے نفاذ، قیام امن، قومی مفاہمت اور راخائن ریاست میں تباہ کن بحران حل کرنے کی کوششیں کر رہی ہے۔ بہت سے لوگوں کو درپیش ناقابل برداشت مصائب سے چھٹکارا دلانا ہماری پہلی ترجیح ہے۔ ہولناک صورتحال کے جواب میں گزشتہ ہفتے میں نے انسانی امداد کی مد میں اضافی 47 ملین ڈالر کا اعلان کیا تھا۔ یہ امداد راخائن ریاست کے بحران سے متاثرہ لوگوں کو دی جائے گی۔ یوں رواں سال اگست سے جاری اس بحران میں امریکی امداد کا مجموعی حجم 87 ملین ڈالر سے زیادہ ہو گیا ہے۔


برما کی صورتحال پر دفتر خارجہ کے افسران اعلیٰ کی بریفنگ

دفتر خارجہ کے اعلیٰ افسر اول: بہت اچھے، سبھی کو صبح بخیر۔ ہمارے ساتھ شمولیت پر آپ سبھی کا شکریہ۔ سپاس گزاری کے دن کی پیشگی مبارک باد۔ میں اپنی بات کے آغاز میں آپ کی توجہ وزیرخارجہ کے بیان کی جانب مبذول کرانا چاہتا تھا جو آج صبح ابھی جاری ہوا ہے۔ یہ بیان ان کے حالیہ دورہ برما اور وہاں ریاست راخائن کے بحران سے نمٹنے کے لیے عالمی برادری کے ساتھ ہماری کوششوں سے متعلق ہے۔ جیسا کہ آپ پہلے ہی جان چکے ہیں کہ وزیرخارجہ نے 15 نومبر کو میانمر کے دارالحکومت نیپیڈا کا دورہ کیا جہاں انہوں نے ریاستی قونصلر آنگ سان سو کی اور مسلح افواج کے کمانڈرانچیف جنرل من آنگ لینگ سے الگ الگ ملاقاتیں کیں۔


2017-11-21

بموقع عالمی تجارتی سربراہی اجلاس

السيدة نويرت: شكراً للجميع على الانضمام إلينا اليوم للحديث عن القمة الدولية لريادة الأعمال التي ستعقد الأسبوع المقبل في حيدر أباد في الهند من 28 إلى 30 تشرين الثاني/نوفمبر. يسعدني أن أستضيف معنا اليوم مستشارة الرئيس إيفانكا ترامب، نائب مساعد مدير ومنسق المساواة بين الجنسين وتمكين المرأة ميشيل بيكيرينغ، والقائم بأعمال نائب مساعد وزير الخارجية لشؤون جنوب ووسط آسيا توم فاجدا.